17 دسمبر 2018
تازہ ترین
 فوج نہ ہوتی تو پاکستان میں بھی مسلمان ملکوں کی طرح تباہی مچی ہوتی، عمران    

 تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان نے کہا ہے کہ فوج نہ ہوتی تو پاکستان میں بھی دیگر مسلم ممالک کی طرح تباہی مچی ہوتی۔ مردان میں جلسے سے خطاب میں انہوںنے کہا کہ آج کل ایک تنظیم پاک فوج کے خلاف بات کر رہی ہے، میں پہلے دن سے امریکا کی جنگ کا مخالف ہوں، قبائلی علاقے میں فوج نہیں بھیجنی چاہئے تھی، لیکن اس میں فوج کا قصور نہیں بلکہ اس کا قصور ہے جس نے فوج قبائلی علاقوں میں بھیجی تھی، فوج نے تو اپنا کام کرنا تھا، یہ پہلے امریکا کی جنگ تھی اب تو اپنی جنگ ہوگئی ہے ، جب ہم  نے فوج بھیج دی اور امریکا کی جنگ لڑے، اس سے قبائلیوں کا نقصان ہوا، لوگ مارے گئے، لاپتہ ہوگئے، کاروبار گھر تباہ ہوگئے، اس مسئلے کا ایک ہی حل ہے کہ خیبر پختون خوا میں قبائلی علاقے کو ضم کر دیا جائے، پاکستانی فوج کے خلاف باتیں کرنے والے پاکستان سے دشمنی کر رہے ہیں، ہماری فوج ہمیں بچاتی ہے، ساری مسلم دنیا میں آگ لگی ہے، فوج نہ ہو تو باقی مسلم دنیا میں جو تباہی مچی ہے یہاں بھی مچے گی ، تحریک انصاف سے چن چن کر ضمیر فروشوں کو نکالیں گے، ہمارے چودہ یا 17 ایم پی ایز نے اپنا ضمیر بیچا، میرا وعدہ ہے کہ ایک ایک کو پارٹی سے نکالیں گے، چاہے الیکشن ہار جائیں لیکن ضمیر فروشوں کو پارٹی میں نہیں رکھیں گے ، مولانا فضل الرحمان کہتا ہے عمران خان یہودیوں کی سازش ہے، فضل الرحمان کے ہوتے ہوئے یہودیوں کی کیا ضرورت ہے، مولانا اقتدار میں ہر پارٹی کے ساتھ مل جاتے ہو، پرویز مشرف، زرداری، نوازشریف فضل الرحمان سب کے ساتھ رہے، کشمیریوں پر ظلم ہورہا ہے اور مولانا دنیا کی سیر کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے سارے لٹیرے اکٹھے ہوگئے اور اداروں پر حملہ کر رہے ہیں، سپریم کورٹ اور اداروں پر حملے کئے جارہے ہیں، یہ لوگ پاناما جے آئی ٹی ممبران کے پیچھے پڑے ہوئے ہیں، سپریم کورٹ کے جج کے گھر پر گولیاں برسائی گئیں، ججز دھمکیوں سے نہ گھبرائیں، واجد ضیا قوم آپ کے ساتھ ہے، قوم اپنی عدلیہ اور انصاف کے ساتھ کھڑی ہے ، دھرنوں سے قوم میں شعور آیا، پہلے جدھر اقتدار ادھر عدلیہ ہوتی تھی لیکن اب ملکی تاریخ میں پہلی عدلیہ نے ملک کے طاقتور وزیراعظم کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کیا، نواز شریف آپ کو تین سو ارب روپے کرپشن پر کرنے پر نکالا گیا، عوام کا پیسا چوری کرکے باہر لے گئے ہیں، میں نے خیبرپختون خوا حکومت کا ایک روپیہ اپنے اوپر خرچ نہیں کیا ۔ قبل ازیں روسی ٹی وی کو انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ  امریکہ پاکستان کو ٹشو پیپر کی طرح استعمال کرتا ہے، افغانستان کے مسئلے کا حل صرف مذاکرات ہیں، ڈونلڈ ٹرمپ افغانستان کی تاریخ نہیں سمجھ رہے، افغانستان میں امن پاکستان کے حق میں ہے، امریکہ کی جنگ میں شرکت سے ہمارا بڑا نقصان ہوا، امریکہ جو امداد دیتا ہے وہ ہمارے نقصان کے سامنے کچھ بھی نہیں۔  پاکستان کو معاشی بحران کا سامنا ہے، افغانستان میں امن پاکستان کے حق میں ہے، امریکہ جنگ کے ذریعے افغانستان کے مسئلے کا حل چاہتا ہے، افغانستان کا مسئلہ فوجی طاقت سے حل کرنے کا فارمولا ناکام ہو گیا، امریکی جنگ میں شرکت کے باعث کرکٹ ٹیموں نے پاکستان آنا چھوڑ دیا، ٹرمپ بھی پاکستان سے متعلق وہی کہہ رہے ہیں جو بھارت کہہ رہا ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟