29 ستمبر 2020
تازہ ترین
امریکہ سے ریلوے انجنوں کی پہلی کھیپ کراچی پہنچ گئی  

امریکہ سے ریلوے انجنوں کی پہلی کھیپ کراچی پہنچ گئی  

 امریکہ سے درآمد کئے جانے والے 55 جدید ریل انجنوں میں سے 7 انجنوں میں مشتمل پہلی کھیپ کراچی کی بندرگاہ پر پہنچ گئی۔ ریڈیو پاکستان کی رپورٹ کے مطابق پاکستان ریلوے کے تعلقات عامہ کے افسر نے بتایا کہ یہ انجن پیر 23جنوری کو ریلوے حکام کے حوالے کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ یہ انجن 4000 ہارس پاور کے ہیں اور یہ ساہیوال بجلی گھر کو کوئلے کی فراہمی کے لئے بھی استعمال کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ توقع ہے کہ باقی 48انجن بھی رواں سال پاکستان ریلوے کے حوالے کردیے جائیں گے۔ واضح رہے کہ جون 2015 میں پاکستان ریلوے اور امریکی کمپنی جنرل الیکٹرک کے درمیان معاہدے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے کہا تھا کہ معاہدے کے تحت جنرل الیکٹرک پاکستان ریلوے کو ڈیزل سے چلنے والے 55 انجن فراہم کرے گی۔ 4000سے 4500 ہارس پاور کے یہ انجن ریلوے میں اب تک کے سب سے طاقتور انجن ہوں گے۔ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ ہر یونٹ کی قیمت 50 کروڑ روپے ہے تاہم صرف تین سالوں میں یہ اپنی قیمت چکا دیں گے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا تھا کہ ان انجنز کو درآمد کرنے کا اہم مقصد پنجاب میں کوئلے سے چلنے والے پاور پلانٹس تک کوئلہ پہنچانا ہے۔ وفاقی وزیر ریلوے کا کہنا تھا کہ ان انجنوں میں سے 20 سے 22 ساہیوال، 10 جامشورو اور دیگر پاور پلانٹس کے لیے مختص کیے جائیں گےجبکہ دیگر 15 انجنوں کو مال گاڑیوں میں استعمال کیا جائے گا۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا آپ کووڈ 19 کے حوالے سے حکومتی اقدامات سے مطمئن ہیں؟