16 نومبر 2018
 الطاف کے ریڈ وارنٹ  ، انٹرپول کے ذریعے گرفتار ی کا حکم

۔ جمعرات کو انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت میں22 اگست کو کراچی پریس کلب کے باہر ایم کیوایم کے بانی کی ملکی سالمیت کےخلاف تقریر اور نعروں میں سہولت کاری کے 3 مقدمات میں ایم کیوایم کے رہنما کنور نوید جمیل ، قمر منصور اور شاہد کی درخواست ضمانت کی سماعت ہوئی جس پر عدالت نے وکلاکے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ  23جنوری تک محفوظ کرلیا جبکہ عدالت نے عامر لیاقت ، ڈاکٹرفاروق ستار ، خالد مقبول صدیقی کے ناقابل ضمانت وارنٹ جاری کردیے ۔فاضل جج نے کہا کہ عامرلیاقت 2 ہزار گزکا بنگلہ بنا رہے ہیں ۔ روز ٹی وی پر نظر آتے ہیں اور آپ لوگوں کو نہیں مل رہے ۔ ایس پی فیض اللہ کوریجو نے مفرور ملزمان کی گرفتاری کیلیے مہلت طلب کی تو مزید سماعت ملتوی کردی گئی ۔دریں اثنا اے این این کے مطابق جوڈیشل مجسٹریٹ جنوبی کی عدالت نے وزیر اعلیٰ ہائوس کے باہر مظاہرے کے دوران ٹریفک کی روانی میں خلل ڈالنے اور لائوڈ اسپیکر ایکٹ کی خلاف ورزی کے مقدمے میں متحدہ پاکستان کے سربراہ فاروق ستار ، خالد مقبول صدیقی سمیت 10 مفرور ملزمان کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کرنے کا حکم دےدیا ۔ دوران سماعت خواجہ اظہار الحسن ، محفوظ یار خان پیش ہوئے جبکہ میئر کراچی کی استثنیٰ کی درخواست منظور کرلی گئی اور تینوں رہنماوں کی عبوری ضمانت میں 15فروری تک توسیع کر دی ۔ اسٹاف رپورٹر کے مطابق اس مقدمے میں ملزمان کے ناقابل ضمانت وارنٹ جاری کیے گئے ۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟