09 اپریل 2020
تازہ ترین
 اقتصادی راہدری منصوبے پر آل پارٹیزکانفرنس

 اقتصادی راہدری منصوبے پر آل پارٹیزکانفرنس

،اورنج ٹرین لائن کامنصوبہ چھٹے جے سی سی اجلاس میں سی پیک کاحصہ بن گیا،گوادرکی ترقی کیلئے پانچ لاکھ گیلن یومیہ پانی کامنصوبہ شروع کیاگیا۔،مغربی روٹ پاکستان کے اپنے وسائل سے بن رہاہے جبکہ مشرقی روٹ پرچین پیسہ خرچ کررہاہے ۔نجی ٹی وی کوانٹرویودیتے ہوئے انہوںنے کہاکہ پاک چین کوریڈورکسی ایک سڑک کانام  نہیں بلکہ چاروں صوبوں کوایک جگہ ملانے کامنصوبہ ہے ،پشاور،کراچی موٹروے نوے کی دہائی میں شروع ہوئی ،اگرنوازشریف کی حکومت ختم نہ ہوتی تویہ منصوبہ 2000ئ میں مکمل ہوجاتاہے اب اس منصوبے کوصرف لاہورتک پہنچنے میں 25سال لگ چکے ہیں ۔انہوںنے کہاکہ 2013ئ سے پہلے پاکستان اورچین کے درمیان کسی روٹ پرکوئی انڈراسٹینڈنگ نہیں تھی ،مغربی روٹ پاکستان کے اپنے وسائل سے بن رہاہے اب تک 40ارب روپے خرچ ہوچکے ہیں ۔عمران خان  نے سی پیک اجلاسوں میں شرکت سے خیبرپختونخواہ حکومت کوروکامغربی روٹ 2018ئ میں مکمل ہوجائیگاجبکہ مشرقی روٹ 2019ئ میں مکمل ہوگا۔انہوں نے کہاکہ 2013ئ اور2016ئ کے گوادرمیں زمین وآسمان کافرق ہے ،گوادرکے لئے صاف پانی پراجیکٹ پرکام جاری ہے گوادرکیلئے 5لاکھ گیلن یومیہ فراہم کرنے کے منصوبے کی منظوری دیدی ہے ،ہم نے صرف2سال میں گوادرسے سہراب تک موٹروے مکمل کی اوراسے ٹریفک کیلئے کھولا۔ سی پیک کے حوالے سے جومسائل موجودہیں ان کے حل کیلئے ہم صوبائی حکومت سے مل کرکام کررہے ہیں ۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟