08 اپریل 2020
تازہ ترین
اقتصادی راہداری کیلئے خصوصی سکیورٹی ڈویږن کے قیام کا نوٹیفکیشن جاری

اقتصادی راہداری کیلئے خصوصی سکیورٹی ڈویږن کے قیام کا نوٹیفکیشن جاری

 وفاقی وزارت داخلہ نے پاک چین اقتصادی راہداری کے لیے بنائی گئی خصوصی سیکیورٹی ڈویږن کے قیام کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا۔ خصوصی سیکیورٹی ڈویږن سی پیک کے تحت چلنے والے تمام ترقیاتی منصوبوں اور ان پر کام کرنےو الے چینی کارکنوں کی حفاظت کرے گا۔ ریڈیو پاکستان کی رپورٹ کے مطابق خصوصی سیکیورٹی ڈویږن میں 13 ہزار 700 اہلکارو ہیں جبکہ اس کے 9 بٹالینز کو 6 ونگز میں تقسیم کیا گیا ہے۔ منصوبہ بندی ڈویږن کے ایک عہدیدار کے مطابق صوبائی حکومتوں کی جانب سے درخواستیں موصول ہونے کے بعد وزارت داخلہ خصوصی سیکیورٹی ڈویږن کے اہلکاروں کو ان صوبوں میں جاری سی پیک منصوبوں کی سیکیورٹی کے لیے تعینات کرے گی۔ خیال رہے کہ گزشتہ برس دسمبر میں سی پیک کے مشترکہ تعاون کمیٹی کے چھٹے اجلاس کے موقع پر چین نے خصوصی سیکیورٹی ڈویږن کے قیام پر اطمینان کا اظہار کیا تھا۔ گزشتہ برس ستمبر میں چودھری نثار نے قومی اسمبلی کو آگاہ کیا تھا کہ سی پیک کی سیکورٹی کے لیے 21 ارب 57 کروڑ روپے کی لاگت سے خصوصی سیکورٹی ڈویږن قائم کی جا رہی ہے، جس میں سول آرمڈ فورسز کے 6 ونگ شامل ہیں۔ انہوں نے ایوان کو تحریری جواب میں بتایا کہ نئے سیکورٹی ڈویږن میں پاک فوج اور سول آرمڈ فورسز کے 13 ہزار 731 اہلکاروں کو شامل کیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا تھا کہ سیکورٹی ڈویږن میں فرنٹیئر کور خیبرپختونخوا کے 852، ایف سی بلوچستان کے 730 اہلکار، پنجاب رینجرز کے 2190 اور سندھ رینجرز کے 730 اہلکار جبکہ پاک فوج کے 9 ہزار 229 اہلکار شامل ہیں۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟