17 اگست 2017
تازہ ترین

عوامی سروے

سوال: آپ کے خیال میں کونسی سیاسی یا مذہبی جماعت صحیح معنوں میں نظریہ پاکستان کی محافظ اور عوامی فلاح و بہبود میں اہم کردار ادا کر سکتی ہے؟

اداروں کو اپنی آئینی اور قانونی حدود کے اندر رہنا ہو گا،رہنما ن لیگ

اداروں کو اپنی آئینی اور قانونی حدود کے اندر رہنا ہو گا،رہنما ن لیگ

ووٹ سے بنی حکومتوں کی اوسط عمر ڈیڑھ سال ہے اور آمریت کی حکومتوں کی اوسط عمر 10 سال ہے،پرویز رشید

 وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا عوام تک ہمارا پیغام پہنچ رہا ہے اور سب اداروں کو اپنی آئینی اور قانونی حدود کے اندر رہنا ہو گا۔ ہر بار ایسی صورت بنا دی جاتی ہے کہ منتخب حکومت اپنی مدت پوری نہیں کر پاتی۔ خواجہ سعد رفیق نے عمران خان اور بلاول بھٹو کو بھی تنقید کرتے ہوئے کہا خیبرپختونخوا کی حکومت ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے اور آئندہ انتخابات میں پی ٹی آئی کو عبرتناک شکست دیں گے۔ انہوں نے کہا عمران خان کسی کی بات نہیں سنتے وہ مچھلی ہے جو پتھر چاٹ کر لوٹتی ہے جبکہ بلاول بھٹو احمقانہ باتیں کر رہے ہیں۔ مسلم لیگ ن کے رہنما پرویز رشید نے کہا 1947 سے 2017 تک کبھی ووٹ کے فیصلے کو نہیں مانا گیا۔ انہوں نے کہا ووٹ سے بنی حکومتوں کی اوسط عمر ڈیڑھ سال ہے اور آمریت کی حکومتوں کی اوسط عمر 10 سال ہے۔ وزیر مملکت طلال چودھری نے کہا نواز شریف اپنی بحالی کیلئے نہیں ملک کیلئے نکلے ہیں کیونکہ پاکستان نے عوام کی رائے رد کرنے کے پہلے بھی نقصان اٹھائے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا تمام لوگوں کو آئین کے دائرے میں رہ کر کام کرنا ہو گا کیونکہ عوام کے ووٹ کی توہین سے بڑی کوئی توہین نہیں۔