23 ستمبر 2018
تازہ ترین
احمد شہزاد کے پاس27جولائی کی ڈیڈ لائن

احمد شہزاد کا ڈوپ ٹیسٹ کے لئے یورین سیمپل رواں سال 3 مئی کو فیصل آباد میں جاری پاکستان کپ ون ڈے ٹورنامنٹ کے دوران لیا گیا تھا، نتیجہ مثبت آنے پر ریویو بورڈ نے بھی تصدیق کردی کہ اوپنر نے ممنوعہ دوا کا استعمال کیا، پی سی بی نے انھیں10جولائی کو چارج شیٹ جاری کرتے ہوئے ہر قسم کی کرکٹ سے معطل کرکے جواب طلب کرلیا تھا۔ طریقہ کار کے مطابق احمد شہزاد کو بی سیمپل کا ٹیسٹ کرانے کیلئے18جولائی تک بورڈ سے رجوع کرنا تھا لیکن انہوں نے اس حوالے سے رابطہ نہیں کیا۔ یاد رہے کہ ڈوپنگ کیسز میں ہرکھلاڑی کے2 یورین سیمپل لئے جاتے ہیں، اگر وہ چیلنج کرے تب ہی بی سیمپل ٹیسٹ کیلئے بھجوایا جاتا ہے، اوپنر نے ایسا کرنے سے گریز کیا۔ گرفت میں آنے کیلئے دوسرا موقع یہ ہوتا ہے کہ وہ الزام کو چیلنج کر دے، احمد شہزاد کے پاس  27جولائی تک کی ڈیڈ لائن ہے۔ ذرائع کے مطابق اوپنر اپنے دفاع میں کیس لڑنے کے لئے تیار ہیں، اگر وہ اپنی صفائی پیش نہ کر سکے تو زیادہ سزا ہوگی، پی سی بی اینٹی ڈوپنگ قواعد کے تحت انھیں کم ازکم 2سالہ پابندی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے، اگر وہ یاسر شاہ کی طرح اپنا جرم تسلیم کر لیں اور ان کو معاف کرنے کی معقول وجہ بھی ہوتو کم سزا پر جان چھوٹ سکتی ہے، لیگ سپنر نے اہلیہ کی بلڈ پریشر کی دوا غلطی سے استعمال کرنے کا اعتراف کیا تھا، ان کو صرف3ماہ کے لئے کرکٹ سے دوری برداشت کرنا پڑی تھی۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟