احتساب عدالت، سابق وزیراعظم صاحبزادوں سمیت 19 ستمبر کو طلب

 احتساب عدالت نے فلیگ شپ ریفرنس میں  سابق وزیراعظم محمد  نواز شریف اور ان کے دو صاحبزادوں کو  19  ستمبر کو طلبی کے لئے سمن جاری کر دیئے جبکہ ان کیخلاف لندن فلیٹس، العزیزیہ سٹیل ملز اور اسحاق ڈار کے خلاف اثاثہ جات ریفرنس بھی اعتراض دور کر کے  احتساب عدالت میں دوبارہ جمع کرا دیئے گئے ہیں۔ احتساب عدالت کے رجسٹرار مشتاق قریشی کے مطابق فلیگ شپ ریفرنس کی اضافی دستاویزات گزشتہ روز قومی احتساب بیورو نیب نے احتساب عدالت میں جمع کرا دی تھیں جس پر فلیگ شپ ریفرنس کی تکنیکی خامیاں دور کر کے ریفرنس جمع کرا دیا گیا تھا۔ احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کی عدالت میں فلیگ شپ ریفرنس سماعت کے بھیج دیا گیا ہے۔ احتساب عدالت نے فلیگ شپ ریفرنس سماعت کے منظور کر لیا ہے اور سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف اور ان کے صاحبزادوں حسین نواز اور حسن نواز کو طلبی کے سمن جاری کرتے ہوئے 19ستمبر کو طلب کر لیا ہے۔ رجسٹرار کے مطابق نیب نے تکنیکی خامیاں دور کر کے تینوں دیگر ریفرنسز بھی رجسٹرار آفس میں جمع کرا دیے ہیں۔رجسٹرار آفس نے  تینوں ریفرنسز کی حتمی سکروٹنی کا عمل شروع کر دیا ہے سکروٹنی مکمل ہونے پر تینوں ریفرنس  عدالت  میں بھجوائے جائیں گے۔

 


عوامی سروے

سوال: متحدہ اورپی ایس پی کےاتحاد سے سندھ میں پی پی پی کی سیاست پرکیااثرات مرتب ہوتے؟