اب تک ہم آزادی کے اصل مقاصد حاصل نہیں کر سکے،فضل الرحمان

 جے یو آئی  ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ منصب تو ہاتھ میں آ جاتے ہیں اور افراد وزیراعظم، صدر بھی بنتے رہے ہیں لیکن منصب منزل نہیں ہے، کوئٹہ میں محمود خان اچکزئی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے جمعیت علمائے اسلام   ف  کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ہم مل جل کر جمہوری سفر کو آگے بڑھانا چاہتے ہیں، اب تک ہم آزادی کے اصل مقاصد حاصل نہیں کر سکے، ہمارا مقصد ہے کہ ملک میں جمہوری ادارے مستحکم ہونے چاہئیں، منصب تو مل جاتے ہیں، لوگ وزیراعظم اور صدر بھی بنتے رہتے ہیں لیکن اصل میں منزل ملنا ضروری ہے۔ مولانا فضل الرحمان  نے کہا کہ امت مسلمہ اور پاکستانی قوم کو مبارکباد دیتا ہوں جن کے احتجاج کے باعث گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کو منسوخ کیا گیا، گستاخانہ خاکے اظہار رائے کی آزادی نہیں امت مسلمہ کی دل آزاری ہے، مغربی دنیا کو پیغام دیتا ہوں کہ امت مسلمہ کی دل آزاری سے باز رہے سربراہ جے یو آئی نے کہا کہ  اقوام متحدہ قانون سازی کے ذریعے ایسی باتوں کو روکے، اور مغرب مسلم اُمّہ کے مقدسات کا احترام کرے محمود خان اچکزئی کا کہنا تھا کہ تبدیلی کا نعرہ تحریک انصاف نے لگایا مگر تبدیلی ہم لائیں گے، وزیراعظم عمران خان اور صدر مولانا فضل الرحمان تو تبدیلی ہوگی، چاہتے ہیں عمران خان اور فضل الرحمان ایک ہی چبوترے پر کھڑے ہوکر سلامی لیں، اسی لئے اپوزیشن جماعتوں کا متحدہ  صدارتی امیدوار لانے کی کوشش کر رہے ہیں، اس حوالے سے  پیپلز پارٹی سے بھی ضرور بات کریں گے ، محمود خان نے کہا کہ بہتر پاکستان ہم سب کی منزل ہے، ماضی کو بھول جائیں بہتر پاکستان بنائیں، ہمیں ایشین ٹائیگر بننے کے لئے آئین کی بالادستی یقینی بنانا ہوگی۔

 


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟