22 اکتوبر 2020
تازہ ترین

گلگت بلتستان کے کالے اور سفید گلیشیئرز

  گلگت بلتستان دنیا میں ایسا خطہ ہے جہاں کے رہنے والوں کی مخصوص رہن سہن، زبان، رسم و رواج اور جغرافیائی طور پر سنگلاخ پہاڑی سلسلے، گلیشیءرز، دریا، سرسبز وادیاں اور تاریخی و دفاعی اعتبار سے دنیا میں منفرد مقام رکھتے ہیں۔ گلگت بلتستان دنیا میں جغرافیائی اور سیاحتی اعتبار سے اس لیے مختلف ہے کہ یہاں پر پاکستان و دنیا کے تین عظیم پہاڑی سلسلے ہمالیہ، ہندوکش اور قراقرم آپس میں مل رہے ہیں۔ اور ان تین پہاڑی سلسلوں میں موجود دلکش گلیشیئرز کا وجود ہے۔ کوہ قراقرم کے گلیشیئرز گلگت بلتستان کی خوبصورتی، انسانی ضرورت اور سیاحت کےلیے اہم اور اکثر انسانی وجود کےلیے خطرہ بھی ہیں۔   کوہ قراقرم دنیا کے بڑے پہاڑی سلسلوں میں شمار ہوتا ہے۔ یہ پہاڑی سلسلہ پاکستان، چین اور ہندوستان کے سرحدی علاقوں میں واقع ہے۔ قراقرم کے معنی کالی بھربھری مٹی یا پتھر ہے۔ قراقرم میں سب سے اونچی چوٹی کے ٹو ہے۔ اس کی بلندی دنیا میں دوسرے نمبر پر ہے۔ ماہرین کے مطابق قراقرم پہاڑی سلسلہ کم عمر، گنجان اور مشکل ترین پہاڑی سلسلہ ہے۔ قراقرم رینج کی لمبائی 500 کلومیٹر یعنی 3000 میٹر ہے۔ اس سلسلہ قراقرم میں 180 سے زیادہ چوٹیوں کی بلندی 7000 میٹر سے زائد ہے۔ جن میں سے 148 کے قریب پاکستان میں اور باقی ہندوستان اور چین میں ہیں۔

گلگت بلتستان کے کالے اور سفید گلیشیئرز