22 جولائی 2019
تازہ ترین

الیکشن کمیشن  ارکان کی تعیناتی کا معاملہ،سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ

 وفاقی حکومت نے سندھ اور بلوچستان سے الیکشن کمیشن کے ارکان کی تعیناتی کے معاملے پر سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیراعظم کے معاون خصوصی نعیم الحق نے کہا ہے کہ سندھ اور بلوچستان سے الیکشن کمیشن کے ممبر سندھ اور ممبر بلوچستان کی تعیناتی سے متعلق بنائی گئی پارلیمانی کمیٹی ڈیڈ لاک کا شکار ہے، وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر کے مابین اس معاملے پر اتفاق رائے نہیں ہوسکا، ڈیڈلاک کے بعد کیا کیا جائے آئین خاموش ہے، سپریم کورٹ ہمیں بتائے ان سیٹوں کو کیسے پر کیا جائے۔ واضح رہے کہ الیکشن کمیشن کےسندھ سے رکن عبدالغفار سومرو اور بلوچستان سے شکیل احمد بلوچ 26 جنوری کو ریٹائر ہوئے تھے، آئین کے مطابق 45 دن میں ممبران کی تقرری کرنا لازم ہے، اس سلسلے میں آئینی طریقہ کار واضح ہے جس کے مطابق ئے ارکان کی تقرری کے لئے وزیر اعظم قائد حزب اختلاف کے مشورے سے نام پارلیمانی کمیٹی کو بھیجتے ہیں، پارلیمانی کمیٹی اسپیکر کی جانب سے تشکیل دی جاتی ہے، جس میں 50 فیصد اراکین حکومتی بینچوں اور 50 فیصد اراکین حزب اختلاف کی جماعتوں سے ہوں گے۔ تاہم الیکشن کمیشن کے ارکان کے ناموں پر وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر کے مابین اس معاملے پر اتفاق رائے ہی نہیں ہوسکا۔

الیکشن کمیشن  ارکان کی تعیناتی کا معاملہ،سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ