ایئرپورٹ حکام سے بدتمیزی، وزیر کی عدم موجودگی پر سماعت ملتوی

<p>لاہور(ویب ڈیسک) گلگلت بلتستان کے وزیر سیاحت فدا حسین کی جانب سے اسلام آباد ایئرپورٹ کے عملے سے بدتمیزی پر ازخود نوٹس کی سماعت صوبائی وزیر کی عدم موجودگی کی بنا پر 3 دسمبر تک کے لئے ملتوی کردی گئی۔ چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے خصوصی بینچ نے لاہور رجسٹری میں ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی۔ سماعت کے دوران عدالت عظمیٰ کو بتایا گیا کہ وزیر سیاحت فدا خان ملک سے باہر ہیں اور 29 نومبر کو واپس آئیں گے۔ جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ فدا حسین کے آنے پر 3 دسمبر کو اسلام آباد میں سماعت کریں گے اور انشا اللہ یہ کیس چلے گا۔ اس کے ساتھ ہی عدالت عظمیٰ نے کیس کی سماعت ملتوی کردی۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز چیف جسٹس نے گلگت بلتستان کے وزیر سیاحت فدا حسین کی اسلام آباد ایئرپورٹ پر حکام سے بدتمیزی کا ازخود نوٹس لیا تھا۔ سپریم کورٹ کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے میڈیا پر خبریں نشر ہونے کے بعد اسلام آباد ایئرپورٹ پر گلگت بلتستان کے وزیر سیاحت کی حکام کے ساتھ بدتمیزی کا نوٹس لیا ۔ رپورٹس میں الزام عائد کیا گیا تھا کہ گلگت بلتستان کے وزیر سیاحت فدا حسین نے فلائٹ منسوخ ہونے پر اسلام آباد انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر ارائیول انچارج کے ساتھ بدتمیزی اور جھگڑا کیا۔ اعلامیے میں کہا گیا کہ میڈیا رپورٹس کے مطابق صوبائی وزیر نے ارائیول انچارج پر برہمی کے بعد انہیں دھکا دیا، جس سے وہ زمین پر گر گئے۔ چیف جسٹس نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے فریقین کو ہفتہ (17 نومبر) کو سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں پیش ہونے کا حکم دیا تھا۔ خیال رہے کہ خراب موسم کے باعث پرواز منسوخ ہونے پر گلگت بلتستان کے وزیر سیاحت فدا حسین نے اسلام آباد ایئرپورٹ پر احتجاجاً اپنی جیکٹ جلائی تھی اور پی آئی اے حکام کے ساتھ بدتمیزی بھی کی تھی جس کی ویڈیو بھی منظر عام پر آ چکی ہے۔</p>
ایئرپورٹ حکام سے بدتمیزی، وزیر کی عدم موجودگی پر سماعت ملتوی