21 اکتوبر 2018
تازہ ترین

چڑیا گھروں میں گوشت کی سپلائی  بند کرنے کا فیصلہ

<p>لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)  محکمہ جنگلی حیات کی طرف سے ادائیگیاں نہ ہونے کی وجہ سے پنجاب کے مختلف چڑیا گھروں میں جانوروں کے لیے گوشت سپلائی کرنے والے ٹھیکیداروں نے سپلائی بندکرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ پنجاب وائلڈلائف کی طرف سے جون سے لے کراب تک چڑیا گھروں اور وائلڈلائف پارکوں میں گوشت اورچارے کی سپلائی کرنے والے ٹھیکیداروں کو ادائیگیاں نہیں ہوسکی ہیں جس کی وجہ سے آئے روز چڑیا گھر، سفاری پارک، وائلدلائف پارک اور زو انتظامیہ کے ساتھ ٹھیکیداروں کے ساتھ بحث مباحثہ اور تلخ کلامی معمول بن چکی ہے۔ لاہورچڑیا گھر اورسفاری پارک میں گوشت کی سپلائی کرنے والے کنٹریکٹرنے بتایا کہ چارماہ ہوگئے ہیں انہیں ادائیگی نہیں ہوسکی، روزانہ لاکھوں روپے مالیت کے جانور گوشت کے لئے سپلائی کرنا ہوتے ہیں، ان کے لئے اب اپنے ملازمین کو تنخواہیں دینا بھی مشکل ہوگیا ہے، انہوں نے بتایا کہ مختلف ٹھیکیداروں نے انتظامیہ پر واضح کردیا ہے کہ اگراسی ہفتے ادائیگیاں نہ کی گئیں تو لاہورچڑیا گھر اورسفاری پارک سمیت پنجاب کے تمام چڑیا گھروں میں سپلائی بند کردی جائے گی۔ ذرائع نے بتایا کہ گزشتہ کئی ماہ سے محکمہ تحفظ جنگلی حیات سیکرٹری اورڈائریکٹرجنرل سے محروم ہے جس کی وجہ سے فنڈز رکے ہوئے ہیں، سیکرٹری زراعت کو تحفظ جنگلی حیات کے محکمے کا اضافی چارج ملنے کے بعد جون میں پیش کیا گیا بجٹ رواں ماہ چند روزپہلے منظورکیا گیا ہے لیکن اب فنڈزکی منظوری کے لئے مجازاتھارٹی کی سیٹ خالی ہے، ڈائریکٹرجنرل کی منظوری کے بغیرفنڈزجاری نہیں ہوسکتے ہیں۔ ذرائع کے مطابق ڈپٹی ڈائریکٹرہیڈ کوارٹرزنے اس صورت حال کے بارے میں سیکرٹری کوخط لکھا ہے، سیکرٹری سے درخواست کی گئی ہے کہ فوری طورپرفنڈزریلیزکرنے کی منظوری دی جائے اورڈی جی وائلڈلائف کی تعیناتی کے احکامات جاری کیے جائیں۔</p>
چڑیا گھروں میں گوشت کی سپلائی  بند کرنے کا فیصلہ