23 اکتوبر 2018
تازہ ترین

فیس بک کمیونٹی لیڈر شپ پروگرام ، 2پاکستانی خواتین منتخب

<p>سماجی رابطے کی مقبول ویب سائٹ  فیس بک کے پہلے کمیونٹی لیڈر شپ پروگرام کے لئے پاکستان سے بھی دو خواتین کا انتخاب کرلیا گیا، جو خواتین کے حقوق اور ان کی مدد کے لئے فیس بک جیسے پلیٹ فارم کے ذریعے خدمات انجام دے رہی ہیں۔ اس لیڈر شپ پروگرام کے لئے پوری دنیا سے 6 ہزار امیدواروں کی درخواستیں موصول ہوئیں ، جس میں سے 115 کمیونٹی لیڈرز کا انتخاب کیا گیا، جن میں پاکستان سے کنول احمد اور نادیہ گانگجی نے اپنی جگہ بنائی۔ یہ 115 منتخب امیدوار کمیونٹی رہنمائوں کے طور پر کام کریں گے، جنہیں فیس بک کی جانب سے تکنیکی تربیت کے ساتھ 50 ہزار امریکی ڈالرز کی مالی معاونت بھی فراہم کی جائے گی، جس کا مقصد یہ ہے کہ یہ کمیونٹی لیڈر اپنے معاشرے میں بہتری لانے، لوگوں میں جدید ٹیکنالوجی کے استعمال اور ان کے مثبت استعمال سے فوائد حاصل کرنے کی حوصلہ افزائی کریں۔ اس لیڈر شپ پروگرام میں جگہ بنانے والی کنول احمد نے حقوق نسواں کے لئے سول سسٹر پاکستان نامی فیس بک پیج کا آغاز کیا تھا تاکہ خواتین اپنی آواز بلند کر سکیں اور ایک دوسرے کے ساتھ شیئر کر سکیں۔ 75 ہزار سے بھی زائد ممبران پر مشتمل اس پیج نے تیزی سے خواتین میں آگاہی و شعور پھیلایا جس کی وجہ سے آج متعدد خواتین اپنے سکول اور دیگر کاروباری سرگرمیوں کو چلا رہی ہیں اور خود کفیل ہیں۔ ایسے ہی نادیہ گانگجی نے خواتین کو  فیس بک پر شی اوپس کے نام سے ایک پلیٹ فارم فراہم کیا، جس کا مقصد خواتین کو معاشی اور اقتصادی طور پر مضبوط بنانا اور انہیں ڈیجیٹل دنیا میں مقام دینا ہے۔ اس کے ذریعے خواتین گھر بیٹھے آن لائن کاروبار کر سکتی ہیں، اپنے کسی بھی مسئلے سے آگاہ کر سکتی ہیں یا آن لائن بزنس کے لئے آگاہی بھی لے سکتی ہیں۔ آج نادیہ گانگجی کی وجہ سے پاکستان کی متعدد خواتین گھر بیٹھے آن لائن بزنس میں کامیاب ہیں۔    </p>
فیس بک کمیونٹی لیڈر شپ پروگرام ، 2پاکستانی خواتین منتخب