22 مئی 2019
تازہ ترین
کا لم

چلیں، وینزویلا پر حملہ کرتے ہیں۔ ایک اور مسرور کن جنگ سہی۔ ایک تو وینزویلامیں کیمونسٹ بہت ہیں پھر تیل کی دولت سے بھرا ہوا ہے۔ کیوبا سے محبت کرنیوالے اس ملک میں واحد خرابی یہ ہے کہ وہاں وسیع پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیار نہیں ہیں۔ رواں ہفتے امریکا کے سرکردہ نو قدامت پسندوں نے واضح الفاظ میں دھمکی دی کہ اگر نیکولس ماڈورو حکومت کو برطرف کرنے…

image

دانشور اور ادیب قوم کا سرمایہ ہوتے ہیں، معاشرے میں ان کا کردار بھٹکے ہوئوں کو درست سمت پر لانے میں معاون ہوتا ہے۔ موجودہ صحافت کی بنیاد 17ویں صدی میں پڑی، جب جرمنی اور بعض دیگر ممالک میں حالات و واقعات پر مبنی رپورٹس کی اشاعت باقاعدگی سے شروع ہوئی۔ گو رپورٹس لکھنے کا رجحان 17ویں صدی سے بھی قبل تھا، لیکن وہ بہت رازدارانہ انداز میں ہوتا تھا،…

image

چھانگا مانگا سیاحتی حوالے سے بھی دنیا بھر میں مشہور ہے۔ چھانگا مانگا ہاتھ سے لگایا ہوا دنیا کا پہلا جنگل ہے۔ برطانوی دور حکومت میں لگائے جانے والے اس جنگل کا خاص مقصد اسٹیم انجنوں کو لکڑی کی فراہمی تھا۔ چھانگا مانگا دو محب وطن اور حریت پسند بھائیوں کے نام سے منسوب ہے، جنہوں نے انگریز کے خلاف عَلَم بغاوت بلند کیا، جس کی پاداش میں برطانوی حکومت…

image

(31 دسمبر 1923ء کی تحریر) جناب رئیس الاحرار کا خطبہ صدارت رئیس الاحرار مولانا محمد علی نے کوکناڈا کانگرس میں جو خطبہ صدارت ارشاد فرمایا وہ اپنی ہمہ گیری، پابندی اصول، وضاحتِ خیال اور انگریزی انشا پردازی کے اعتبار سے بے نظیر خطبہ ہے۔ آپ نے انکسار و شکریہ کی  ابتدائی ناگزیر رسوم کو پورا کرنے کے بعد کانگرس کے ساتھ مسلمانوں کے تعلقات کی تاریخ نہایت تفصیل…

image

انہوں نے 10 دسمبر 1969 کو بڑے شہروں سے شائع ہونے والے اخبارات کے ملازمین کے لیے عبوری امداد کا اعلان کیا کیونکہ ریجنل اخبارات کے حوالے سے مکمل معلومات انہیں فراہم نہیں کی جا سکی تھیں۔ جسٹس فاروقی نے ہی عبوری امداد کا اعلان کرتے ہوئے پہلی بار اے اور بی کٹیگری کے اخبارات کا تعین بھی کیا۔ میٹروپولیٹن ایریاز کے جن اخبارات کی سالانہ آمدنی 25 لاکھ…

image

تاریخ میں زندہ رہنے کیلئے مٹی سے محبت اور زمین کے ساتھ جڑت بلکہ زمین زادوں کے ساتھ غیر مشروط وابستگی لازم ہوتی ہے پھر کہیں جا کر یہ نظریہ سامنے آتا ہے: جس دھج سے کوئی مقتل کو گیا، وہ شان سلامت رہتی ہے لیکن ہم ایسے ’’امید پرست‘‘ خوابوں کے حصار میں جکڑے، فطرت کے برعکس توقعات وابستہ کیے رکھتے ہیں حالانکہ تاریخ کے طالب علم…

image

گزشتہ روز عالمی یومِ صحافت منایا گیا۔ چونکہ خاکسار بھی خود کو صحافی ہی سمجھتا ہے۔ کچھ گزارشات اس حوالے سے کرکے میں بھی اپنا ساڑھ پھونک لوں۔ ممکن ہے کچھ ہم خیالوں کی نمائندگی ہوجائے اور اس سے عین ممکن ہے کہ بہتوں کا بھلا بھی ہوجائے، جن کی میری طرح صحافی کہلانے کے چکر میں جوتیاں بھی قریباً گھس چکی ہیں، نئی تو اب خریدنے کی سکت نہیں،…

image

اب سنورتے رہو بلا سے میری دل نے سرکار خودکشی کر لی (جون ایلیا) آج تو تمہار ے لیے مجھ سے دعا کے لفظ نہیں بن رہے۔ کالم کا درد مجھ سے برداشت نہیں ہو رہا۔ ایک بیٹے کی بچیوں کی فیس 6300/- بن چکی تھی تو جیب سے 2100/- فیسوں اور تین سو رجسٹروں کیلئے نکلا۔ بائیک کیلئے پٹرول کے پیسے گھر کے خرچے سے نکالے۔…

image

ماضی پر نظر دوڑائیں تو صاف پتا چلتا ہے کہ 1977 میں اُس وقت کی متحدہ اپوزیشن، جسے ’’پاکستان قومی اتحاد‘‘ کا نام دیا گیا تھا، نے ’’استعمار و سامراج‘‘ کے ایجنڈے پر کام کرتے ہوئے ایک ایسی تحریک شروع کی جو ابتدا میں چند سیٹوں پر انتخابی دھاندلی کے خلاف تھی، لیکن بعد میں ’’عالمی اسٹیبلشمنٹ‘‘ اور امریکا کی جانب سے بے پناہ فنڈنگ کے ذریعے اس میں ناصرف…

image

یوں تو پاکستان میں رضاکارانہ خون کے عطیات دینے کا رجحان عام دنوں میں بھی بہت کم ہے، لیکن ماہ رمضان میں رضا کارانہ خون عطیہ کرنے کی شرح میں تشویش ناک حد تک کمی دیکھنے میں آجاتی ہے۔ عام لوگ تو دیگر مہینوں کی طرح اس ماہ میں بھی اپنے قریبی رشتہ دار مریضوںیا حادثے کا شکار افراد کے لیے متاثرہ مریض یا فرد کے رشتہ داروں اور جان…

image

 وزیراعظم عمران خان نے اپنے خطاب میں کہا کہ میں سیاست میں خدمت کے لیے آیا ہوں۔کیونکہ اللہ تعالی نے مجھے ایمان سے نوازا ہے اور میری زندگی کا مقصد ذاتی فائدے کے حصول سے نکل کر عوام کی خدمت ہے۔ کیونکہ میں سمجھتا ہوں کہ میں اللہ کو جواب دہ ہوں۔ جب اللہ عزت عطا کرتا ہے تو بہت بڑی ذمہ داری بھی دیتا ہے اور اس ذمہ داری…

image

پاکستان میں 15 میٹر سے زیادہ بلند ڈیموں کی تعداد 150 ہے جس میں تربیلا اور منگلا سب سے پرانے ہیں، قیام پاکستان سے آج تک ملک میں صرف دو ’’میگا ڈیمز‘‘ کی تعمیر ہوئی، جن میں سے ایک 138 میٹر اونچا منگلاڈیم ہے جو 1967 میں مکمل ہوا جب کہ دوسرا 143 میٹر اونچا تربیلا ڈیم ہے جو 1974 میں مکمل ہوا۔ دوسری جانب امسال عالمی اداروں کی مختلف…

image

شدت پسندوں کے خاتمے کا یقین سے کوئی دعویٰ نہیں کر سکتا۔ مصر جیسے اہم علاقائی ملک میں اخوان المسلمون کی موجودگی کا خیال اہم حلقوں کے کان کھڑے کر دینے کیلئے کافی ہے۔ آج کے حقائق لیبیا اور سوڈان میں اخوان المسلمون کی پسپائی کی طرف اشارہ کرتے ہیں ۔مگر اس کی بنیاد پرہم یہ دعویٰ نہیں کر سکتے کہ حکمرانی کی خواہاں تمام شدت پسند تحریکیں بتدریج دم…

image

اسد عمر کے بعد نئے مشیر خزانہ آئندہ  مالی سال کے لیے بجٹ سازی اور آئی ایم ایف سے پروگرام فائنل کرنے میں مصروف ہیں۔ ملک میں بڑھتی مہنگائی، روپے کی بے قدری، ٹیکس وصولیوں میں کھربوں کے شارٹ فال پر قابو پانا، درآمدات میں کمی سمیت مالیاتی خسارے  اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارے پر قابو پاکر ملکی اور غیر ملکی سرمایہ کاری بڑھانے  اور جی ڈی پی گروتھ میں اضافے…

image

٭50لاکھ گھروں کی تعمیر، پاکستان ہائوسنگ ٹیکنالوجی سے استفادہ کرے، چینی ماہرین سمارٹ فون کے بعد چین نے سمارٹ گھروں کی تعمیر کا بھی کام ممکن کردیا ہے۔ اس ٹیکنالوجی کے تحت بنے بنائے میٹریل کو جوڑ کر ایک دن میں ایک گھر تعمیر کیا جاسکتا ہے۔ چینی ماہرین نے وزیراعظم پاکستان کو مشورہ دیا ہے کہ پچاس لاکھ گھر تعمیر کرنے ہیں تو سمارٹ گھروں کو اپنایا جائے۔…

image

(30 دسمبر 1923ء کی تحریر) ہم علیٰ الاعلان پوچھتے ہیں کہ وہ اس میثاق کے ان نقایص و عیوب کی وضاحت کریں جن سے ہندو مفاد کو ضرر پہنچنے کا اندیشہ ہے یا جن سے مسلمانوں کی ناجائز طرفداری کا احتمال ہو سکتا ہے۔ یہ سوال محض پرتاپؔ، کیسریؔ اور ملاپؔ ہی سے نہیں بلکہ بندے ماترمؔ، بھائی پرما نند، لالہ لاجپت رائے، پنڈت مالوی، امرت بازارؔ پتریکا، سرونٹؔ…

image

انسان کی ہمیشہ سے یہ خواہش رہی ہے کہ ماضی یا مستقبل میں سفر کرے کیونکہ اللہ تعالیٰ نے انسانی خمیر میں تجسس کا ایسا مادہ گوندھ رکھا ہے جو اسے کسی پل چین نہیں لینے دیتا۔ کچھ لوگ اسے بے صبری کا نام دیتے ہیں تو بعض اسے اپنی حدود سے تجاوز گردانتے ہیں لیکن میں اسے بھی نعمت خداوندی ہی قرار دیتا ہوں کیونکہ اگر انسانی فطرت میں…

image

مرزا غالب نے تندرستی کو ہزار نعمت قرار دیا تھا بشرطیکہ تنگدستی نہ ہو اور اگر تنگدستی ہو تو پھر غریب علاج کے لیے کہاں جائے۔ علاج کی سہولتوں پر صرف امیر اور پیسے والوں کا حق نہیں بلکہ علاج کی سہولیات ہر شخص کو بلا تفریق ملنی چاہیے اور یہ اس کا بنیادی حق ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے عوام کی اس بنیادی ضرورت کا ادراک کرتے…

image

بادشاہت کے نظام میں تمام اختیارات حکمران کی ذات میں جمع ہو جاتے تھے۔ اس کے احکامات کی تعمیل رعایا پر فرض تھی۔ اس کے فرامین سے انحراف کو بغاوت کہا جاتا تھا۔ اس لیے فلسفیوں، مذہبی، علماء اور دانشوروں کے سامنے یہ مسئلہ تھا کہ اس کے اختیارات کو کن بنیادوں پر محدود کیا جائے، تاکہ وہ ان کا استعمال کر کے رعایا پر ظلم و ستم نہ کرے۔…

image

بھارتی مستقل مندوب برائے سلامتی کونسل کو آج بھارت کے سفارتی حلقے بڑی مبارک باد دے رہے ہیں، کیونکہ ان کی ملازمت میں مولانا مسعود اظہر کو عالمی دہشت گرد بنادیا گیا ہے، سابق بھارتی ڈی جی وکرم سود کا تھنک ٹینک بڑی چھلانگیں لگارہا ہے کہ انہوں نے بڑا معرکہ سر کیا ہے کہ بالآخر چین کو بھی اس پر راضی کرلیا جب کہ ابھی تک یہ بلا ان…

image

یہ غنیمت ہے جو ہے فرصتِ گریہ حاصل پھر یہ کمبخت سہولت بھی کہاں رہتی ہے یاد کرنا، کیے جانا بھی تو اک عادت ہی تو ہے اور اک روز… یہ عادت بھی کہاں رہتی ہے (سلمان باسط) عمران خان کے ’’کڑاکے شاہ‘‘ کہہ رہے ہیں کہ پٹرول 200 روپے فی لیٹر بھی ہو جائے تو قوم برداشت کر لے گی، پیٹ پر پتھر باندھ…

image

ہرگزرے دن کے ساتھ عام آدمی کی زندگی میں ہنسنے کے موقعے کم اور رونے دھونے کے مواقع بڑھ رہے ہیں، کبھی بات بات پر ہنستے تھے اب بات بات پر رونا آتاہے ، اہل پاکستان کی ہنسنے کی عمر کا آغاز اب رونے سے ہوتاہے، پھر یہ زندگی بھر کا رونا بلکہ اوڑھنا بچھونا بن جاتاہے۔دور کے ڈھول سہانے لگتے ہیں، ترقی یافتہ ممالک میں بھی ہنسنے کے موقعے…

image

 ایک مراسلے میں مذہبی امور کی وزارت نے عازمین حج کو پرائیویٹ گروپوں میں لے جانے والے حج گروپ آرگنائزروں سے کہا تھا کہ وہ اپنے کوٹہ کے پانچ فیصد عازمین حج کو سرکاری سکیم کے اخراجات پر سعودی عرب لے جانے کا بیان حلفی دیں وگرنہ ان کے نام سعودی وزارت حج کو نہیں بھیجے جائیں گے لیکن ٹور آپریٹرز ایسا کرنے سے گریزاں ہیں۔ وزارت مذہبی امور اور…

image

علامہ محمد اقبال نے آل انڈیا مسلم کانفرنس کے لاہور میں 21 مارچ 1932 کو ہونے والے سالانہ اجلاس میں صدارتی خطبہ دیا۔ اگرچہ اس خطبے کا حوالہ بہت کم دیا جاتا ہے لیکن مسلمانان ہند کی قومی زندگی میں یہ خطبہ اس لحاظ سے بہت اہم ہے کہ اس کے اختتام پر علامہ اقبال نے مسلمانان ہند کی قومی صورتحال کی بہتری کے لیے پانچ اقدامات تجویز کیے۔ یہ…

image

ڈنیل کالڈر اپنی کتاب ’’ دی انفرنل لائبریری‘‘ میں لکھتے ہیں’’ سلطنت روما کے دور سے آمر کتابیں لکھتے آئے ہیں، مگر 20ویں صدی میں آمروں کی لکھی کتابیں بکثرت منظر عام پر آئیں، اور یہ سلسلہ ابھی تک جاری ہے‘‘۔ یہ بات بڑی عجیب مگر سچائی سے خالی نہیں کہ آمروں کی بڑی تعداد نے عملی زندگی کا آغاز بطور مصنف کیا، ایسا وہ شاید اپنے خیالات کو برتر…

image

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟