25 مئی 2019
تازہ ترین

موجیں ہی موجیں… موجیں ہی موجیں…

وطن عزیز میں رمضان آنے سے قبل کمائی کا پروگرام تیار کرلیا جاتا ہے، تمام چیزوں کی قیمتیں زیادہ کردی جاتی ہیں۔ رمضان سے ایک دن پہلے میں بازار گیا تاکہ حال جان سکوں تو یہ جان کر بہت خوشی ہوئی کہ ہر منافع خور، گراں فروش اور ذخیرہ اندوز اپنی چھریاں تیز کررہا اور کہہ رہا تھا ہر چیز مہنگی ہوگئی ہے، ہر دُکان دار نے دوسروں کی کھال اُتارنے کی تیاری کر رکھی تھی اور کہہ رہے تھے کہ پیچھے سے مال مہنگا ہوگیا ہے، اب ہم کیا کریں۔ میں نے کہا، فکر نہ کریں، رمضان میں ابلیس کو قید کردیا جاتا ہے، اس لیے فکر کی کوئی بات نہیں۔ اس کے بعد عید آئے گی پھر ہم سب ایک دوسرے کی کھالیں اتاریں گے۔ ویسے بھی بہت مہنگائی ہے۔ عوام کو کیا پتا چلے گا کہ حکومت نے مہنگائی کی ہے یا پٹرول کی وجہ سے ہوئی یا ڈالر کا کام ہے۔ بہرحال اب موجیں ہی موجیں ہیں۔ اب ہر گھر میں خوشحالی ہوگی۔ میں اپنے کام میں خوب بے ایمانی کروں گا اور لوگ اپنے اپنے کام میں کام دکھائیں گے۔ 
مہنگائی ہو یا چوریاں ڈاکے، ڈاکے سے بات یاد آئی کہ ڈاکو بھی اب خوب عوام کی خدمت کریں گے۔ پولیس بھی خوب لوگوں کی خدمت کرے گی، اُس کی بھی عید آنے والی ہے۔ ٹریفک پولیس تو رمضان میں عوام کی دوست بن جاتی ہے۔ بیسن سو روپے کلو مہنگا ہوگیا۔ ٹینڈوں کی شکل کے سیب دو سو روپے کلو ہیں۔ ہر آدمی کام کرتے ہوئے کہہ رہا ہے جناب رمضان ہے، ہمارے بھی چھوٹے چھوٹے بچے ہیں۔ میں نے کہا، میرے تو بڑے بڑے بچے ہیں۔ ابھی تو درزی بھی کام دکھائیں گے۔ دوسری قومیں اپنے تہوار کے مواقع پر ہر چیز کی قیمت آدھی کردیتی ہیں، ہم تو آدھی زیادہ کردیتے ہیں۔ ہمارے عوام ایک دوسرے کے ساتھ محبت کرتے ہیں۔ ہمارے اخلاق سے کوئی بھی محفوظ نہیں۔ بے شک ہم نماز، روزہ، زکوٰۃ، خیرات کرتے رہیں ہر جگہ قرآن کا دورہ ہورہا ہے مگر زبان کا خیال کسی کو نہیں۔ محض دورۂ قرآن سے اللہ خوش نہیں ہوگا، رب خوش ہوگا تو قرآن پاک پر عمل کرنے سے۔ عمل یہ ہے کہ رمضان میں لوگوں کو کم نفع پر سودا دیا جائے اور کم نفع پر تجارت کی جائے۔ مسلمان، مسلمانوں کا خیال کریں۔ رمضان دوسروں پر رحم کرنے کا سبق دیتا ہے۔ قرآن پڑھنے سے انسان شفیق ہوجاتا ہے۔ نماز انسان کو عاجزی سکھاتی ہے۔
روزہ انسان کو صبر سکھاتا ہے، جھوٹ کے لیے ڈھال ہے۔ رمضان میں مساجد نمازیوں سے بھری ہوتی ہیں لیکن عید گزرنے کے بعد آپ جاکر دیکھ لیں، رش چھٹ جاتا ہے۔ کوئی شخص مشکل میں ہے تو اس کی مدد کا سبق صرف رمضان میں نہیں، آپ کی بقیہ پوری زندگی میں ہے۔ اللہ کرے ہم رمضان کے اصل مقاصد کو سمجھ سکیں اور اُن پر عمل پیرا ہوسکیں۔
روزہ رکھنے کے باوجود جگہ جگہ لڑائی ہورہی ہوتی ہے۔ رمضان کا مطلب عام لوگوں کو کم ہی پتا ہے۔ ماہ صیام میں امن کا پیغام عام ہونا چاہیے۔ ایک دوسرے  سے محبت پیار زیادہ ہو۔ رمضان قربانی کا کہتا ہے، ذرا غور کریں کہ رمضان کیا ہے؟ 
کہتے ہیں دنیا سے شیطان چلا جاتا ہے
پھر روزوں میں کیوں ایمان چلا جاتا ہے 
ہر چیز کی قیمت آسمان سے باتیں کرتی ہے 
پستی میں کیوں انسان چلا جاتا ہے 
روزہ تو قربانی اور تقویٰ کا نام ہے
ایثار کا پھر کیوں امکان چلا جاتا ہے 
دونوں ہاتھوں سے لُوٹا جاتا ہے روزے داروں کو
کیوں خدا کادِل سے فرمان چلا جاتا ہے 
فرض میں کوئی چیز فرازیؔ فرضی نہیں ہوتی
انسانیت سے گر کر انسان چلا جاتاہے 
مسلمان پر ایمان کا سچا اور پکا ہونا لازم ہے، اگر وہ دوسروں کی مجبوریوں سے فائدہ اُٹھائے گا توپھر ایمان سے جائے گا۔ ہمیں بہت سے کاموں میں خدا کے خوف کی ضرورت ہے۔