21 اکتوبر 2021
تازہ ترین

ڈاکٹروں سے باہمی تعلق اور علاج کا نیا ذریعہ ڈاکٹروں سے باہمی تعلق اور علاج کا نیا ذریعہ

معاشرے میں اکثر دیکھا جاتا ہے، ہم اپنی زندگی کی الجھنوں اور مصروفیات میں اس قدر کھوچکے کہ صحت کا خیال رکھنا بھول جاتے ہیں۔ اس میں کوئی دورائے نہیں کہ آج کے دور میں صحت و تندرستی کا ہونا کسی نعمت سے کم نہیں۔ ہم نے خود کو بے شمار الجھنوں میں ڈال رکھا ہے۔ کوئی رات بھر جاگ کر پڑھائی کرتا ہے تو کوئی پیسے کمانے کی فکر میں دفتر میں اوور ٹائم لگارہا ہوتا ہے اور کوئی اپنا گھر بنانے کی فکر میں مبتلا ہے۔ انسان اسی کشمکش میں اپنی صحت کو نظرانداز کردیتا ہے جب کہ وہ اس سے غافل ہے کہ اگر اپنی صحت کا خیال ہی نہیں رکھے گا تو زندگی کے روزمرّہ کے کام خوش اسلوبی سے کیسے سرانجام دے سکے گا۔ 
یہ پہلو تو صرف ابھی جسمانی امراض کی بات ہے جب کہ نفسیاتی صحت پر توجہ دینا ہم آج بھی اپنی آخری ذمے داری سمجھتے ہیں۔ ان سب وجوہ کے 
باوجود ہسپتالوں کے باہر اس قدر بھیڑ اس لئے پائی جاتی ہے، کیونکہ بہت سے مریض ڈاکٹر سے رجوع اپنے مرض کی پیچیدگی کے بعد ہی کرتے ہیں، جس کے نتائج بعض اوقات سنگین نکلتے ہیں۔ خصوصاً زیادہ افراد کا بلڈپریشر اور ذیابطیس میں مبتلا ہونا معمول کی بات بن چکا، لہٰذا ہمیں بیماری کی تشخیص کے بعد اس کی پیچیدگی سے بچنے کے لئے ڈاکٹر سے باقاعدگی کے ساتھ اپنا چیک اپ کرواتے رہنا چاہیے اور اس حوالے سے علاج کے لئے ڈاکٹر اور مریض دونوں کی باہمی کاوش اہمیت کی حامل ہے۔
سب سے اہم اور ضروری بات جو ضرب المثل بھی ہے، ہم سب کو ذہن میں رکھنی چاہیے کہ ’’پرہیز علاج سے بہتر ہے۔‘‘ ایک پڑھا لکھا شخص بخوبی واقف ہوتا ہے کہ صحت، تندرستی کا ہونا کس قدر ضروری ہے، لہٰذا وہ ہر اس چیز سے دُور رہتا ہے جو صحت کے لئے مضر اثرات کا باعث ہو۔ اگر ہسپتال اور بیماری سے بچنا چاہتے ہیں تو ہمیں بہتر خوراک اور 
ورزش کو روزمرّہ کے معمول کا حصہ بنالینا چاہیے، کیونکہ اچھی صحت ناصرف ذہنی تنائو کو کم کرتی بلکہ صحت مندانہ زندگی کو فروغ بھی دیتی ہے۔ 
ایک ڈاکٹر ہونے کی حیثیت سے میرا فرض بنتا ہے کہ میں مریض کا خیال ناصرف ہسپتال اور کلینک میں رکھوں بلکہ اس تحریر کو لکھنے کا مقصد بھی یہی ہے۔ اس کے ساتھ ایک مریض کا بھی فرض بنتا ہے کہ وہ ڈاکٹر کی بتائی گئی ہدایات پر باقاعدگی سے عمل کرے، تاکہ دونوں کے درمیان ایک تعاون برقرار رہ سکے، لہٰذا اپنی اور اپنے چاہنے والوں کی صحت کا خیال رکھیں۔