17 اپریل 2021
تازہ ترین

پنجاب اوقاف آرگنائزیشن، اصلاحات سے تعمیر تک کا سفر پنجاب اوقاف آرگنائزیشن، اصلاحات سے تعمیر تک کا سفر

محکمہ اوقاف کے زیر انتظام خودمختار ادارہ پنجاب اوقاف آرگنائزیشن کا قیام1960ءمیں عمل میں آیا۔ اس کے زیر تحویل 546مزارات اور 437 مساجد ہیں۔ پنجاب اوقاف آرگنائزیشن کا مالی سال جولائی تا جون ہوتا ہے، تاہم 2020 میں وزیر اوقاف و مذہبی امور کے تجویز کردہ 17نکاتی پروگرام کے تحت اس نے بے مثال ترقی کرکے دیگر محکموں کے لئے تاریخ رقم کردی۔ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے وژن کو مدنظر رکھتے ہوئے پنجاب اوقاف آرگنائزیشن کی آمدن میں اضافے کی مانیٹرنگ کے لئے باقاعدہ پالیسی مرتب کی گئی۔ محکمہ کے ہر سیکشن کی ذمے داریوں کو مزید فعال بنادیا گیا۔ محکمانہ پالیسیوں کو خراب کر نے والے عناصر کو کیفر کردار تک پہنچانے کے سلسلے میں سخت اقدامات جاری ہیں۔ وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے وژن اور وزیر اوقاف سید سعید الحسن شاہ کی بہترین حکمت عملی اور ہدایت پر محکمہ اوقاف میں اصلا حاتی عمل تیزی سے جاری ہے۔ گزشتہ دوسال کی کارکردگی محکمے کی محنت کا عملی ثبوت ہے۔ مانیٹرنگ ٹیمیں تشکیل دی جارہی ہیںجو تمام درباروں کی تزئین و آرائش، لنگرخانوں، نذرانہ بکسوں کی آمدن، وقف زمینوں پر شجرکاری، سی سی ٹی وی کیمروں، واک تھرو گیٹس کی چیکنگ اور دیگر معاملات سے متعلق رپورٹس باقاعدگی سے حکومت کو ارسال کررہی ہیں، مزید سخت اقدامات عمل میں لائے جارہے ہیں۔ 
ماضی میں اس محکمے کو جس انداز میں مال مفت دل بے رحم سمجھ کر لوٹا گیا وہ سیاہ تاریخ ہے۔ وزیراعلیٰ کے تمام صوبائی محکموں اور اداروں کی کارکردگی کا باقاعدگی سے جائزہ لینے کے بھی مثبت نتائج سامنے آرہے ہیں۔ گزشتہ سال کرونا وائرس کے باوجود محکمے کی آمدن میں نومبر2020 تک 7 فیصد اضافہ ہوا۔ پنجاب اوقاف آرگنائزیشن کے زیر تحویل 8093کمرشل یونٹس کا کرایہ ڈسٹرکٹ پرائس اسسمینٹ کمیٹی(DPAC) سے ازسرنو تشخیص کروایا گیا، جس سے محکمے کی آمدن میں معقول اضافہ ہوگا اور تین ہزار سے زائد یونٹس پر نیا کرایہ لاگو کرکے وصول بھی کرلیا گیا ہے۔ وقف زرعی رقبہ کومتعلقہ ڈپٹی کمشنر کی طرف سے جاری کردہ علاقہ ریٹ کے مطابق نیلام عام کیا جارہا ہے۔ فیس منتقلی کرایہ داری کی پالیسی کو حتمی شکل دی گئی ہے، جس سے 2019-20 ءمیں ایک کروڑ 71لاکھ کی آمدن ہوئی۔سر پلس فنڈ کی بینک آف پنجاب میں قلیل مدتی سرمایہ کاری کے تحت پنجاب اوقاف آرگنائزیشن کی آمدن میں گزشتہ سال کی نسبت71.28فیصد اضافہ ہوا ہے۔ مزید برا گزشتہ دو برس میں محکمے کے سرمایہ کاری کے اثاثہ جات میں 77.34فیصد اضافہ ہوا۔ حکومت پنجاب کی ہدایات کو مدنظر رکھتے ہوئے ضروری اخراجات کنٹرول کیے۔ 2019-20 کا سالانہ بجٹ 2 ارب 48کروڑ تھا جب کہ ایک ارب 72 کروڑ کے اخراجات کےے گئے۔ مالی سال 2019-20کیلئے حکومت پنجاب کی طرف سے 300 ملین روپے منظورکیے گئے۔ اوقاف آرگنائزیشن نے اپنے بجٹ مالی سال 2019-20ءمیں 261.480ملین روپے تجویز کیے، جس میں 17جاری سکیموں کے لئے 86.60ملین روپے جب کہ 49نئی سکیموں کیلئے 
174.88ملین روپے مختص کیے گئے۔ قرآن پاک کے بوسیدہ اوراق کو محفوظ کرنے کیلئے 4قرآن محل لاہور I، ساہیوال، گجرات اوربھلوال میںتعمیر کی سکیمیں مکمل ہوچکیں جبکہ4قرآن محل(راولپنڈی، ملتان، فیصل آباد، بہاولپور) پر تعمیراتی کام جاری ہے۔ 2019-20 میں دربار ومساجد کی تعمیر و مرمت ہوئی۔ جن میں دربار شاہ ابوالمعالیؒؒ، جامع مسجد زندہ پیر ولی قندھاری (حسن ابدال)، چلہ گاہ سخی سرور (دھونکل) اور تعمیر طہارت خانے دربار سخی سرور ڈی جی خان پر مشتمل 28ترقیاتی سکیمیں مکمل کی گئیں۔ بادشاہی مسجد، داتادربار، داتادربار ہسپتال، لاہور، گوجرانوالہ، سرگودھا، راولپنڈی، فیصل آباد، پاکپتن، ملتان، بہاولپور اور ڈیرہ غازی خان میں محکمہ اوقاف پنجاب کی کل 75 ہزار ایکڑ اراضی پر محیط ہے، جس میں سے 29 ہزار ایکڑسے زائدرقبہ زیر کاشت اور 45 ہزار ایکڑ سے زائدرقبہ غیر کاشت ہے۔ اوقاف کی اراضی پر واقع 1426 رہائش گاہیں اور 6179 اراضی پر دکانیں واقع ہیں جو کرائے پر ہیں۔ وزیراعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر محکمہ اوقاف کی زیرتحویل وقف اراضیات پر 323ایکڑ3کنال 15 مرلہ پر کمرشل پلان تیار کرلیا گیا ہے۔ اوقاف کی 124 پراپرٹیز کی نشاندہی کی گئی، جس میں لاہور زون 148 ایکڑ 01کنال 15مرلہ،بادشاہی مسجد 01 کنال 5 مرلہ،گوجرانوالہ زون 12ایکڑ01 کنال 09 مرلہ ، فیصل آباد زون 9ایکڑ3کنال 17 مرلہ،سرگودھا زون 26ایکڑ 7کنال 13مرلہ،راولپنڈی زون 02ایکڑ 5 مرلہ،پاکپتن زون 15ایکڑ6 کنال ، ملتان زون 36 ایکڑ5کنال 19مرلہ،بہاولپور زون 39ایکڑ 1کنال 14مرلہ اور ڈیرہ غاز ی خان زون میں 32ایکڑ 5 کنال 18مرلہ شامل ہیں۔ وزیراعظم اوروزیراعلیٰ پنجاب نے محکمہ کے بزنس پلان کو بے حد
 سراہا ہے۔ ان کمرشل اراضی کے ٹھیکہ جات سے محکمہ کی مالی حیثیت مزید مضبوط ہوگی اور اس آمدن سے عوامی فلاح وبہبود کے لئے پلان بنایا جائے گا۔ 
سال 2019-20میں مذہبی ہم آہنگی کے لئے اسلامی تحقیقی کتب بالخصوص صوفیاءکے افکار و تعلیمات پر مبنی علمی وتحقیقی کتب کی اشاعت عمل میں آئی۔ جن میں فوائد الفواد، سید ہجویر، حضرت خواجہ غلام فرید، حضرت بہاءالدین زکریا ؒ ملتانی، حقوق وفرائض و اخلاقی تعلیمات شامل ہیں۔ عوام کی سہولت کیلئے اوقاف آرگنائزیشن کے زیر کنٹرول درباروں اور مساجد کی معلومات کی خاطر PITB کے تعاون سے ویب سائٹ کا قیام عمل میں لایا جاچکا۔ دربار حضرت داتا گنج بخشؒ پر زائرین کو طبی سہولت فراہم کرنے کیلئے میڈیکل فرسٹ ایڈسینٹر قائم کیا گیا۔ پنجاب پبلک سروس کمیشن کے ذریعے محکمہ کی متعددخالی اسامیوں (پیتھالوجیسٹ، ریڈیالوجیسٹ، میڈیکل آفیسرز، سب ڈویژنل آفیسرز، سٹاف نرسز، ڈیٹابیس ایڈمنسٹریٹر) تقرریاں عمل میں لائی گئیں۔حکومت پاکستان کے گرین اینڈ کلین وژن کے تحت 175ایکڑ وقف اراضی کی شجرکاری کیلئے نشاندہی کی گئی۔ مزید براں محکمہ ماحولیات کے تعاون سے گرین ٹائون لاہور میں موجود وقف اراضی پرپودوں کی نرسری کیلئے ایم او یو پر بھی دستخط ہوئے۔ پٹہ دار کو اوقاف آرگنائزیشن کی اراضیات پر بھی درخت لگانے کی ہدایت کی گئی۔ ڈیرہ غاری خان سرکل میں 32ہزار وقف اراضی کی جدیدٹیکنالوجی سے حد براری کا عمل جاری ہے۔ محکمے کی زمین پر عرصہ دراز سے قابض ناجائز قابضین سے2510ایکڑ 7کنال 4 مرلہ رقبہ واگزار کروایا جاچکا، جس کی مالیت 5211ملین ہے۔
مستقبل کے منصوبہ جات کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لئے حکمت عملی تیار کرلی گئی ہے، اس سلسلے میں مزارات ومساجد پر اے ٹی ایم مشین کی طرز پر الیکٹرونک کیش ڈیپازٹ مشینیں نصب کی جارہی ہیں۔ بہترمنافع حاصل کرنے کے لئے حکومت پنجاب کے ادارہ پنجاب پنشن فنڈ کی معاونت سے پنشن فنڈ پالیسی کا اجراءکیا جائے گا۔محکمے کی پراپرٹیز کے لئے ایک بزنس ماڈل مرتب کیا جارہا ہے، جس کے ذریعے کمرشل اراضیات کا نیلام عام کیا جائے گا۔پنجاب اوقاف آرگنائزیشن کی پراپرٹیز کی جیومیپنگ کی جارہی ہے، جس سے ڈیجیٹل ریکارڈ مرتب ہوگا اور شفاف نیلام عام ہوگا۔ مزارات پر زائرین کو سہولتیں فراہم کرنے کے لئے پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت مختلف کمپلیکس (شاپنگ پلازہ، ہسپتال پلازہ، پارکنگ پلازہ وغیرہ) تعمیر کیے جائیںگے۔ واگزار کروائی گئی زرعی اراضی کو ڈیری فارمنگ، فش فارمنگ اور لائیوسٹاک فارمنگ کے لئے نیلام عام کیا جائے گا۔ پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف قرآن اینڈ سیرت سٹڈیز کو ازسرنو فعال بنایا جارہا ہے۔ خالی اسامیوں کے محاذPPSCکے ذریعے موزوں افراد کو بھرتی کیا جائے گا، جس کے لئے کارروائی کا آغاز کردیا گیا ہے۔مخیر افراد کے ساتھ مل کر پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت قرآن پاک کے مقدس، بوسیدہ اوراق کی ری سائیکلنگ کی جائے گی۔ دربار حضرت داتاگنج بخشؒ لاہور اور دربار حضرت بابا فریدالدین گنج شکرؒ پاکپتن کی توسیع کی جائے گی۔ بڑے مزارات پر مسافرخانوں کی تعمیر اور وضو کے پانی کو دوبارہ استعمال کرنے کے لئے زیر زمین واٹر سٹوریج ٹینک تعمیر کیے جائیں گے۔ 
پنجاب اوقاف آرگنائزیشن میں خواتین کو مخصوص کوٹہ جات میں نمائندگی دی گئی ہے۔ 2014 میں ریکروٹمنٹ کمیٹیاں تشکیل دی گئیں، جن میں دو خواتین ارکان رکھی گئیں۔ خواتین کے لےے نماز کی جگہ مختص کی گئی اور علیحدہ واش رومز مخصوص کےے گئے۔ خواتین کی فلاح وبہبود کے لئے Gender Mainstreamingکمیٹی تشکیل شدہ ہے۔ داتا دربار ہسپتال لاہور اور ایوان اوقاف میں ڈے کیئر سینٹر کا قیام عمل میں لایا گیا۔ ریکروٹمنٹ میں بھی خواتین کے لئے کوٹہ مختص کیا جاتا ہے۔