پاکستان
 ٹرمپ انتظامیہ نے کانگریس کو بتایا ہے کہ وہ پاکستان کے ساتھ مل کر کشیدہ علاقوں میں یک طرفہ اقدام  اٹھانے کی خواہشمند ہے جس سے دونوں ممالک کے مفاد میں تعاون کی فضا بحال ہوسکے گی۔ کانگریس کو جاری کی جانے والی رپورٹ کے مطابق پینٹاگون نے خطے میں 20 سے زائد دہشت گرد تنظیموں سے لڑنے کے لیے امریکا۔افغان کی مشترکہ پلیٹ فارم کی ضرورت کو اجاگر کیا۔ کانگریس کو پیش کی گئی رپورٹ میں پاکستان کا اپنی سرحد میں مبینہ دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں سے نمٹنے پر ان کے رویے میں تبدیلی کی ضرورت کا بھی بتایا گیا۔ پینٹاگون نے قانون سازوں کو بتایا کہ نئی امریکی پالیسی کا مقصد دونوں حکومتوں کا مل کر طالبان میں بیرونی تعاون کو روکنا اور ان کے خطرناک اثرات کو کم کرنا تھا۔ پاکستان کے ساتھ ہمارے فوجی تعلقات خطے میں مشترکہ مفاد تک ناساز رہے ہیں جبکہ آگے بڑھنے کے لیے ہمیں پاکستان کی جانب سے ان کے حدود میں دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کو ختم کرنے کے لیے ان کے رویے میں تبدیلی لانی ہوگی۔ رپورٹ میں نشاندہی کی گئی کہ 20 سے زائد دہشت گرد اور باغیوں کی تنظیمیں اب بھی افغانستان اور پاکستان میں کام کر رہی ہیں جبکہ ان کی موجودگی پر خطے میں افغانستان کی حمایت یافتہ امریکی پلیٹ فارم کی ضرورت ہے جو ان پر نظر رکھے گی اور خطروں کا جواب بھی دے گی۔ پاکõافغان سرحدی علاقہ القاعدہ، القاعدہ برصغیر، حقانی نیٹ ورک، لشکر طیبہ، تحریک طالبان پاکستان، داعش اور اسلامک موومنٹ آف ازبکستان کی محفوظ پناہ گاہیں بنا ہوا ہے۔ ان دونوں مقامات پر سکیورٹی چیلنجز ہیں اور یہ علاقے خطے میں سکیورٹی اور استحکام کے لیے انتہائی خطرناک ہیں۔  حالیہ پاکستانی ملٹری کی جانب سے کیے گئے آپریشن میں کچھ دہشت گردوں کی پناہ گاہیں ختم کی گئیں جن میں طالبان اور حقانی نیٹ ورک شامل ہیں تاہم امریکا پاکستانی قیادت کو دہشت گردوں سے ہر سطح پر لڑنے کی ضرورت کو بتاتا رہا ہے۔  افغانستان میں امریکا کی جانب سے انتھک محنت کے بعد جیتی گئی جنگ کی صورت حال اب بھی بہت نازک ہے اور اس کی حفاظت کی ضرورت ہے جبکہ امریکا نے اپنے سفارتی، فوجی اور معاشی وسائل کو 17 سال سے جاری جنگ پر مذاکرات کرنے کے لیے استعمال کر رہا ہے۔ پینٹاگون نے افغان حکومت اور وہاں کی عوام کو درپیش مسائل سے نمٹنے کے لیے خصوصی تعاون کا عزم کر رکھا ہے۔ امریکا کا افغان حکومت کے لیے عزم پائیدار ہے لیکن لا محدود نہیں اور یہ تعاون کسی بلینک چیک کی صورت میں بھی نہیں ہے۔ افغان حکومت کی جانب سے جب تک ہمیں پیش رفت اور حقیقی اصطلاحات آئیں گے ہم بین الاقوامی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ان کی حمایت جاری رکھیں گے۔ طالبان یہ جنگ کبھی نہیں جیت سکتے اور انہیں یہ احساس دلانے کی ضرورت ہے کہ امن اور سیاسی استحکام کے لیے ان کے پاس واحد راستہ افغان حکومت کے ساتھ مذاکرات ہیں۔

وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا  ہے کہ عمران خان کا رویہ سیاسی مخالف نہیں سوتن جیسا ہے، ہم نے ساڑھے چار سال سازشوں کا سامنا کیا، اختلاف رائے کو دشمنی میں نہ بدلیں تو کوئی خطرہ نہیں، قانون کے خلاف فیصلہ آتا ہے تو اس پر بات کرنا ہمارا حق ہے، جہانگیر ترین کے معاملے میں جے آئی ٹی  بنی نہ مانیٹرنگ جج مقرر کئے، نواز شریف کو تنخواہ  لینے کے الزام میں  نااہل قرار دیا گیا، عمران خان نے تسلیم کیا کہ ان کی آف شور کمپنی ہے، عمران خان بہت پرہیز گار بنتے ہیں وہ بتائیں کاروبار کیا کرتے ہیں، عمران خان اور شیخ رشید کو کون بتاتا ہے کہ اب کس کو گھسیٹا جائے گا۔  میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ صبح سویرے عمران  خان کا نام لے لیا سارا دن خراب گزرے گا اٹھارہویں ترمیم کے بعد صوبوں کے اختیارات میں اضافہ ہوا، سندھ کے عوام پیپلز پارٹی سے جواب مانگ رہے ہیں دیکھنا ہوگا کارکردگی کس حکومت کی بہتر ہے، ہم نے ساڑھے چار سال سازشوں کا سامنا کیا، احتساب کا گھنائونا کھیل کھیلا جارہا ہے، ادارے اپنے دائرہ کار میں رہ کر کام کریں تو ترقی جاری رہتی  ہے ، سپیکر نے خدشہ ظاہر کیا ہے تو اس میں بڑا وزن ہے، اختلاف رائے کو دشمنی میں نہ بدلیں تو کوئی خطرہ نہیں ، قانون  سے متصادم  فیصلے پر بات کرنا عدلیہ پر چڑھائی کے مترادف نہیں۔  عمران خان کو گالیاں دینے کی عادت ہوگئی ہے۔ ریمارکس پاس کرتے ہوئے عہدوں کا خیال رکھا جانا چاہئے۔   
image

لاہور ہائیکورٹ نے چیئرمین پیمرا ابصار عالم کی تعیناتی کو کالعدم قرار دیدیا ۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ چیئرمین پیمرا کو میرٹ سے ہٹ کر تعینات کیا گیا، چیئرمین پیمرا کی تعیناتی  شفاف طریقے سے نہیں ہوئی،  عدالت نے چیئرمین  پیمر اکا تقرر تیس دن کے اندر قانون کے مطابق کرنے کا حکم بھی دیا ۔ درخواست گزار اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے چیئرمین پیمرا ابصار عالم کی تعیناتی کو چیلنج کیا تھا اور اپنی درخواست میں موقف اختیار کیا کہ ابصار عالم کی تعیناتی کے لئے دو  بار اشتہار جاری کئے گئے، پہلے اشتہار کے مطابق ابصار عالم تعلیمی معیار پر پورا نہیں اترتے تھے، ابصار عالم  کی تعیناتی کیلئے دوبارہ کم تعلیمی قابلیت  کا اشتہار دیا گیا۔  ترجمان پیمرا کے مطابق عدالتی فیصلے کے بعد ابصار عالم نے اپنا عہدہ چھوڑ دیا اور وزارت قانون و انصاف نے اس ضمن میں نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا۔ 
image

 وزیراعظم کے مشیر برائے قومی سلامتی لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ ناصر جنجوعہ کا کہنا ہے کہ امریکا بھارت کی زبان بول رہا ہے جب کہ امریکا اور بھارت کشمیر پر ایک ہی موقف رکھتے ہیں۔ اسلام آباد میں نیشنل سکیورٹی پالیسی سے متعلق سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کےخلاف جنگ میں پاکستان نے بھاری جانی و مالی نقصان اٹھایا، لیکن دنیا نے دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی جنگ کو قدر کی نگاہ سے نہیں دیکھا۔ پاکستان نے دشمن کے خطرناک عزائم کو شکست دی، آج شرپسند ہتھیار ڈال رہے ہیں، آج جیوے جیوے بلوچستان کے ساتھ جیوے جیوے پاکستان کے نعرے لگ رہے ہیں۔  بھارت پاکستان کو مستقل طور پر روایتی جنگ کی دھمکی دے رہا ہے، امریکا بھارت کی زبان بول رہا ہے جب کہ امریکا اور بھارت کشمیر پر ایک ہی موقف رکھتے ہیں۔ بھارت کو افغانستان میں کردار دے دیا گیا، پاکستان کو سنگین دھمکیاں دی گئیں اور بھارت کو پاکستان پر ترجیح دی گئی جب کہ امریکا سی پیک کی مخالفت بھی کر رہا ہے۔  افغانستان میں استحکام اولین ترجیح ہونی چاہیے، امریکا افغانستان میں شکست کا الزام پاکستان پر لگا رہا ہے، امریکا پاکستان پر حقانی اور طالبان کا ساتھ دینے کا الزام لگاتا ہے جب کہ پاکستان میں دہشت گردی امریکا اور مغرب کا ساتھ دینے پر ہوئی۔ افغانستان میں طالبان مزید مضبوط ہورہے ہیں، بھارت ہتھیاروں کا ذخیرہ کر رہا ہے، چین اور روس سے مقابلے کے لیے امریکا خطے میں عدم توازن پیدا کر رہا ہے، جنوبی ایشیا کی سلامتی دباومیں ہے۔
image

احتساب عدالت میں اسحاق ڈار کیخلاف اثاثہ جات ریفرنس کیس میں نجی بنک افسر فیصل شہزاد اور ڈائریکٹر قومی اسمبلی شیر دل خان کے بیانات قلمبند کر لئے گئے۔ فیصل شہزاد نے ا سحاق ڈار کے بنک اکا ئونٹس کی تفصیلات عدالت میں پیش کیں۔ گواہ شیر دل خان نے بتایا کہ اسحاق ڈار این اے 95 لاہور سے 1993 میں رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے، 16 دسمبر 1993 کو بطور ایم این اے حلف اٹھایا اور 4 نومبر 1996 تک رکن قومی اسمبلی رہے، گواہ نے بیان ریکارڈ کراتے ہوئے مزید بتایا کہ جب کوئی رکن قومی اسمبلی بنتا ہے تو اسے تنخواہ کی ادائیگی شروع ہو جاتی ہے، 1993 میں اسحاق ڈار 14 ہزار روپے ماہ وار تنخواہ لیتے تھے، اسحاق ڈاردوسری مرتبہ این اے97 سے رکن قومی اسمبلی منتخب اور انہوں نے 15 جنوری 1997 کوحلف اٹھایا، اسحاق ڈار 5 فروری 1997 کو وزیر بن گئے۔ ۔دوسری جانب اسحاق ڈار کے ضامن نے جائیداد قرقی کے احتساب عدالت کے حکم کو اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کر رکھا ہے۔ واضح رہے کہ اسحاق ڈار کے خلاف استغاثہ نے 28 گواہان کی فہرست عدالت میں جمع کرائی تھی، جن میں سے 7 گواہ اب تک بیان ریکارڈ کروا چکے ہیں۔ یہ شہادتیں ضابطہ فوجداری کی شق 512 کے تحت ریکارڈ کی جا رہی ہیں۔
image

 پاکستان کی سیاست میں تیزی سے شہرت پانے والی مریم نواز عالمی میڈیا کی بھی توجہ کا مرکز بن گئیں، نیویارک ٹائمز کی رپورٹ میں مریم نواز کو پاکستان کی سب سے باہمت اور طاقتور خاتون قرار دیا گیا ہے۔ نیو یارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق 2017ئ میں مریم نواز دنیا کی 11 باہمت اور طاقتور خواتین میں شامل ہیں۔ پاکستانی خواتین میں ان کا پہلا نمبر ہے۔ مریم نواز کی پاکستانی سیاست میں تیزی سے شہرت کی وجہ ان کا بلند حوصلہ ہے۔ امریکی جریدے نے انہیں اپنے والد میاں نواز شریف کی دست راست قرار دیا ہے۔
image

 ترک صدر رجب طیب اردوگان نے ایک مرتبہ پھر امریکی صدر کے بیت المقدس ٟ یروشلمٞ کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینے کے فیصلے کو رد کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ بہت جلد مشرقی یروشلم فلسطینی ریاست کا دارالحکومت ہوگا۔ ترکی کے شہر کرامان میں حکمران جماعت کی جانب سے بیت المقدس کے حق میں نکالی گئی ایک بڑی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے طیب اردوگان کا کہنا تھا کہ بیت المقدس چونکہ مقبوضہ ہے اس لیے نہ ہم وہاں جاسکتے ہیں اور نہ ہی سفارت خانہ کھول سکتے ہیں۔ اردوگان نے وقت کا تعین کیے بغیر کہا کہ  انشااللہ وہ دن قریب ہیں جب ہم سرکاری طور پر وہاں سفارت خانہ کھول دیں گے۔ خیال رہے کہ اس وقت ترکی کا قونصل خانہ اسرائیل کے شہر تل ابیب میں ہے اور ان کے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات دنیا کے دیگر ممالک کی طرح قائم ہیں۔  اردوگان نے حکمران جماعت کے جلسے میں خطاب کے دوران کہا کہ یہودیوں کا یروشلم پر کوئی حق نہیں کیونکہ یہ مسلمانوں کا دارالحکومت ہے۔ او آئی سی اجلاس کے مشترکہ اعلامیے کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 13 دسمبر کے نتائج سے ظاہر ہوتا ہے کہ دنیا نے اتحاد کا مظاہرہ کیا ہے۔ 
image

 پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ انتظار کر رہا ہوں کہ نواز شریف تحریک کا آغاز کریں جیسے ہی وہ تحریک کا آغاز کریں گے میں بھی میدان میں آئوں گا دیکھتے ہیں کہ عوام کس کے ساتھ ہے ۔ اوکاڑہ میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کہتے ہیں کہ وہ عدلیہ کے خلاف تحریک چلائیں گیں کیا انہوں نے اس سے قبل کبھی کوئی تحریک چلائی بھی ہے ؟ کیا ن لیگ نے اس وقت تحریک چلائی جب مشرف نے آپ کو جیل میں ڈالا؟ آپ کے لوگ تو اس وقت تو تتر بتر ہوگئے تھے۔ نوازشریف اپنی چوری بچانے کے لیے عدالت پر حملہ کر رہا ہے، اگر آج عدالت نوازشریف کو بری کر دے تو وہ اسی عدالت کی تعریف کرے گا، جب نواز شریف اپنے گھر سے نکلے گا تو  پاکستان کے لوگ نوازشریف سے ا یک سوال پوچھیں گے، نوازشریف بتائو کس کو خوش کرنے کیلیے ختم نبوت قانون کو تبدیل کرنیکی کوشش کی؟ نوازشریف اپنے اور میرے کیس کا موازنہ کر رہے ہیں کرپشن تو اقتدار میں ہوتی ہے میں کبھی اقتدار میں نہیں رہا، آپ نے 30 ہزار کروڑ کا جواب دینا تھا وہ نہیں دیا میں نے فلیٹ سے متعلق 60 دستاویزات پیش کی، نوازشریف نے صرف ایک کاغذ پیش کیا وہ قطری خط تھا۔ ہر کرپٹ سیاست دان نواز شریف کے ساتھ ہے ، امپائرز کو بھی بلالو اس کے باوجود نوازشریف کو شکست دیں گے۔ عمران خان کہتے ہیں کہ میرا ایک روپیہ پاکستان سے باہر نہیں ہے میرا جینا اور مرنا پاکستان میں ہے ، کیا میں نے ایک بھی فیکٹری لگائی؟ کیا بینک سے ایک روپیہ بھی قرضہ لیا؟ کیا میں نے نوکریاں دلوائیں، سفارشیں کروائیں؟ میں کرکٹ سے کمائی گئی رقم واپس پاکستان لایا۔ پی ٹی آئی چیرمین نے کہا کہ شہباز شریف تمہارا ڈرامہ ختم ہوچکا، لوگ تمہیں سمجھ چکے ہیں، ہم شہباز شریف کیخلاف نیب میں جائیں گے انکے خلاف نئی چیزیں آئی ہیں خواجہ سعد رفیق سے بھی پوچھوں گا تمہارے پرائز بانڈ کیسے نکلتے تھے؟ خواجہ آصف سے بھی15 لاکھ روپے جو دبئی سے لیتے ہیں اسکا پوچھوں گا۔
image

ملکی تاریخ میں پہلی بار آرمی چیف سینیٹ کمیٹیوں کو بریفنگ دیں گے۔ اس حوالے سے سینیٹ کی تمام کمیٹیوں کا اجلاس منگل کی صبح 10 بجے طلب کر لیا گیا ہے جس میں تمام ارکان کو شرکت کی ہدایت کی گئی ہے ۔ معلوم ہوا ہے کہ اس اجلاس میں میں ڈی جی ملٹری آپریشنز بھی علاقائی اور عالمی صورتحال کے تناظر میں بریفنگ دیں گے۔
image

  بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کی والدہ اور بیوی کے ویزے کی درخواست پاکستان کو موصول ہوگئیں۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کلبھوشن یادیو کی والدہ اور بیوی درخواستیں ملنے کی تصدیق کی اور کہا کہ ان کی پروسیسنگ کی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کلبھوشن کی والدہ اور بیوی کی درخواستیں انسانی بنیادوں پر ویزے کے لئے ملی ہیں۔
image

وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا ہے کہ حکومت کی مدت پوری ہونے پر 60روز کے اندر انتخابات ہوجائیں گے، حکومت 4جون کو اپنی مدت پوری کرے گی اور انتخابات وقت پر ہوں گے۔ جدہ میں  میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ  قوم کو ترقی کے تسلسل کو قائم رکھنا چاہئے  ، ملک میں بجلی کے سنگین بحران پر قابو پانے میں سی پیک نے اہم کردار ادا کیا کیونکہ ہم نے 2013کے انتخابات میں بجلی بحران اور دہشت گردی پر قابو پانے کا وعدہ کیا ، خان صاحب ناتجربہ کار سیاست دان ہیں، ان کی پارٹی نے خیبر پختو نخوا میں ایک میگاواٹ بجلی بھی پیدا نہیں کی۔
image

وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ کراچی سرکلر ریلوے کی بحالی کا کام اب  درست سمت میں جاری ہے اور اس معاملے پر کوئی اختلاف نہیں  ۔ کراچی میں صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت نے ریلوے کو جدید خطوط پر استوار کرنے کیلئے اقدامات کئے ہیں جس کے نتیجے میں ریلوے کی آمدن میں اضافہ ہوا ہے۔  رواں مالی سال میں کراچی پشاور مین لائن ایم ون پر کام شروع کیا جائیگا جو چین پاکستان اقتصادی راہداری کا اہم منصوبہ ہے۔ فروری میں کراچی، حیدرآباد،  میرپورخاص منصوبے پر کام کا آغاز ہوگا جبکہ اگلے تین سال میں ریلوے کی کوئی بوگی خراب حالت میں نہیں ہوگی۔
image

قصور میں وڈانہ کے قریب کار سڑک کنارے کھڑے 2  رکشوں سے ٹکرا گئی جس سے 4 افراد جاں بحق جبکہ 2 زخمی ہوگئے ۔ریسکیو ذرائع کے مطابق 4 افراد موقع پر جاں بحق جب کہ 2 زخمی ہوگئے۔ حادثے کے بعد فوری طور پر لاشوں اور زخمیوں کو ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں دو زخمیوں کو طبی امداد دی جارہی ہے۔ حادثے میں جاں بحق ہونے والے افراد کی شناخت 25 سالہ آفتاب، 20 سالہ عدنان، 30 سالہ نعمان کے ناموں سے ہوئی جب کہ ایک شخص کی شناخت نہ ہوسکی۔ ریسکیو ذرائع کے مطابق حادثہ کار ڈرائیور کی تیز رفتاری کے باعث پیش آیا جب کہ پولیس نے حادثے کی رپورٹ درج کرکے کارروائی شروع کردی ہے۔
image

بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں چرچ پر خود کش حملے اورفائرنگ کے نتیجے میں 2خواتین اور بچوں سمیت9افراد جاں بحق اور 35سے زائدزخمی ہوگئے جن میں سے 10افراد کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے، واقعہ کے بعد2خود کش حملہ آور فرار ہوگئے ہیں جن کی تلاش کےلئے سرچ آپریشن شروع کر دیا گیا ۔پولیس کے مطابق کوئٹہ کے علاقے زرغون روڈ پر واقع چرچ کے دروازے پر ایک خود کش حملہ آور نے خود کو دھماکے سے اڑادیا جبکہ اسکے ساتھی چرچ میں داخل ہونے میں کامیاب ہوگئے، دہشت گردوں اور سکیورٹی فورسز کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں دوسرا دہشت گرد ہلاک ہوگیا ۔دہشتگردوں کی فائرنگ اور خود کش دھماکے کے نتیجے میں 2خواتین اور بچوں سمیت9افراد جاں بحق اور 35سے زائد زخمی ہوگئے دھماکے کے بعد کافی دیر تک دہشت گردوں اور سکیورٹی فورسز کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ جاری رہا واقعہ کے بعد نعشوں اور زخمیوں کو فوری طورپر سول ہسپتال کوئٹہ منتقل کر دیا گیا جہاں ڈاکٹروں اور پیرامیڈیکل سٹاف نے زخمیوں کو علاج معالجے کی سہولیات فراہم کیں۔ پولیس کے مطابق جس وقت چرچ پر حملہ کیا گیا اس وقت 400سے زائد افراد اپنی عبادت میں مصروف تھے۔ وزیرداخلہ بلوچستان سرفراز بگٹی نے بتایا کہ چرچ پر حملہ کرنے والے 2خود کش حملہ آوروں میں سے ایک نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا جبکہ دوسرا حملہ آور پولیس اور ایف سی کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے میں ماراگیا۔ایک دہشتگرد مرکزی دروازے پر اور دوسرا دہشتگرد چرچ کے احاطے میں مارا گیا۔  واقعہ کے بعد پولیس ، ایف سی اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں نے چرچ کو گھیرے میں لے لیا اور علاقے کو کلیئر کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ آئی جی پولیس بلوچستان معظم انصاری نے چرچ کے دورے کے موقع پر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ ایک حملہ آور نے خود کو چرچ کے دروازے پر دھماکے سے اڑادیا جبکہ دوسرا فائرنگ سے مارا گیا ۔ حملے کے وقت چرچ میں 400 افراد موجود تھے،  اگر دہشتگرد عمارت میں داخل ہوجاتے تو بہت زیادہ جانی نقصان ہوتا۔ چرچ کی عمارت کو کلیئر کردیا گیا ہے جبکہ اطراف کے علاقوں میں سرچ آپریشن شروع کردیا گیا ہے، حملے کے بعد ڈی آئی جی کوئٹہ عبدالرزاق چیمہ نے بھی چرچ کا دورہ کیا۔ ایک خود کش حملہ آور نے گیٹ پر اپنے آپ کو دھماکے سے اڑادیا جسکے بعداسکے 3ساتھی چرچ میں داخل ہوئے اور فائرنگ شروع کردی ۔ اہلکاروں کی فائرنگ سے ایک حملہ آور مارا گیا جس کی خود کش جیکٹ پھٹ نہ سکی جسے بم ڈسپوزل کا عملہ ناکارہ بنا رہا ہے ۔  فائرنگ کے بعد2خود کش حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں جن کی تلاش کیلئے علاقے کو گھیرے میں لیکرسرچ آپریشن کا عمل شروع کردیا گیا ۔ چرچ میں موجود خواتین ،بچوں اوردیگر لوگوں کو ریسکیو کرلیا گیا ہے ۔اقلیت سے تعلق رکھنے والی رکن بلوچستان اسمبلی انیتا عرفان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سکیورٹی اداروں کی بروقت کارروائی کی وجہ سے بڑا سانحہ ہونے سے بچ گیا۔ شہر میں اقلیتی برادری کو نشانہ بنانے کے حوالے سے موبائل پر میسجز گردش کر رہے تھے۔ ہمارے حوصلے بلند ہیں اور دہشت گردی سے ہمیشہ مقابلہ کریں گے اور اس کے لیے اقلیتی برادری حکومت کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑی ہے۔
image

سابق وزیراعظم نواز شریف نے انصاف کے لئے تحریک چلانے کا عندیہ دے دیا۔ انہوں نے کہا کہ کل جو فیصلہ آیا وہ اپنے منہ سے خود بول رہا ہے۔ ملک میں انصاف کا دہرا معیار نہیں چلے گا۔ پاکستان روانگی سے قبل لندن میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ کل جو فیصلہ آیا ہے وہ خود اپنے منہ سے بول رہا ہے اور ہماری کہی ہوئی ایک ایک بات بات سچ ثابت ہورہی ہے۔ نواز شریف نے کہا کہ یہ انصاف کا دہرا معیار ہے۔ سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ میری ایک خیالی تنخواہ جس کو میں نے لی بھی نہیں تھی اس کو اثاثہ مان لیا اور انہوں نے جو لاکھوں پائونڈ کے کاروبار اور نیازی سروسز آف شور کمپنی جس کو خود مان چکے ہیں کہ میرا اثاثہ ہے اس کو کہا جارہا ہے کہ اثاثہ نہیں ہے۔ عمران خان کو اہل قرار دینے کے فیصلے پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مجھے کہا جارہا ہے کہ تنخواہ نہیں لی جو چند لاکھ یا ہزاروں درہم کی تھی جبکہ یہ نیازی سروسز کا لاکھوں پائونڈ کا کاروبار تھا جس کا اعتراف خود عمران خان کر چکا ہے جس کی ویڈیوز موجود ہیں لیکن بینچ اس کی صفائی دے رہا ہے۔ نواز شریف نے عدلیہ کے فیصلے پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان میرے خلاف 4 صفحات کا مقدمہ کرکے گھر جا کر بیٹھ گیا اور اس کی جگہ بینچ نے میرے خلاف مقدمہ لڑا اور فیصلہ سنا دیا لیکن جب ہم نے عمران خان کے خلاف مقدمہ کیا تو بینچ اسی طرح وہاں پر وکیل بن گیا اس کا اندازہ کیجیے دونوں میں کیا فرق ہے۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ وزیراعظم کو اقامے پر نکالا جاتا ہے اور وہ شخص جو تسلیم اور اقرار کر رہا ہے اس کو چھوڑ دیا جاتا ہے یہ کہاں کا انصاف ہے؟ انصاف کے دو ترازو نہیں چلیں گے۔ سپریم کورٹ کے فیصلے پر شدید تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں نے پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ عمران خان اور جہانگیر ترین کے مقدموں میں نواز شریف کو ہی دوبارہ نااہل کر دیا جائے گا اور ہو بہو وہی ہوا لیکن میرے لیے کچھ اور اس کے لیے کچھ اور یہ انصاف نہیں چلے گا۔ ملک میں انصاف کے لیے تحریک چلانے کی بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اس طرح کا انصاف پاکستان میں نہیں چلے گا۔ اس کے خلاف بھرپور تحریک چلائیں گے اور جو نظریہ ضرورت چل رہا تھا اب اس کے خاتمے کا وقت آگیا ہے۔ نواز شریف نے کہا کہ میری جدوجہد پاکستان میں قانون اور آئین کی حکمرانی کے لیے ہے اس کی جو قیمت ادا کرنی پڑے گی میں کروں گا لیکن یہ سلسلہ آگے نہیں چلے گا۔ یاد رہے کہ سپریم کورٹ نے نواز شریف کو رواں سال 28 جولائی کو بیٹے کی کمپنی سے قابل وصول تنخواہ کاغذات نامزدگی میں ظاہر نہ کرنے پر نااہل کر دیا تھا جس کے فوری بعد انہوں نے وزیراعظم کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔ پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما حنیف عباسی نے تحریک انصاف پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان اور جہانگیر ترین پر الزامات عائد کرتے ہوئے نااہلی کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دی تھی جس پر طویل سماعت کے بعد عمران خان کو اہل اور جہانگیر ترین کو نااہل قرار دیا گیا تھا۔
image

سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ بار بار کہا جاتا ہے کہ ہم اداروں سے تصادم کی پالیسی پر عمل پیرا نہیں ہیں لیکن ہمارے بیانات محاذ آرائی اور تصادم کی کیفیت پیدا کر رہے ہیں ، یہ صورتحال کسی بھی حوالے سے ملکی مفاد میں نہیں ہے۔ اپنے ایک بیان میں چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ ن لیگ کو بے یقینی کے ماحول سے نکلنا ہوگا اور ملک کو بھی بے  یقینی سے نکالنا ہوگا کیونکہ گوں مگوں کی پالیسی کسی کے مفاد میں نہیں ہے۔ ملک تاریخ کے انتہائی اہم موڑ پر ہے ہمیں جوش سے زیادہ ہوش سے کام لینا ہوگا ، ہمیں قوم کو مثبت اور پر امید راستے پر لگانا ہوگا۔ انہوں نے کہا مسلم لیگ ن کی طرف سے بار بار کہا جاتا ہے کہ ہم اداروں سے تصادم کی پالیسی پر عمل پیرا نہیں ہیں لیکن ہمارے بیانات محاذ آرائی اور تصادم کی کیفیت پیدا کر رہے ہیں اور یہ صورتحال کسی بھی حوالے سے ملکی مفاد میں نہیں ہے۔
image

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا ہے کہ اپنی نسلوں کے خوابوں کی تکمیل کے لئے ہمیں آرمی پبلک اسکول جیسے سانحات کی روک تھام کے لیے اقدامات کرنا ہوں گے۔ سانحہ آرمی پبلک اسکول پشاور کے 3 سال مکمل ہونے پر سماجی رابطے کی ویٹ سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا تھا کہ آج کے روز اے پی ایس پشاور میں بچوں اور اساتذہ کو شہید کیا گیا اور آج ہم سب انتہائی دکھ کے ساتھ اس سانحے کے شہدا کو یاد کر رہے ہیں، اے پی ایس کا سانحہ دل دہلا دینے والا واقعہ تھا۔ عمران خان کا  کہنا تھا کہ ہمیں اپنی نسلوں کے خواب پورے کرنے کےلئے سانحہ اے پی ایس جیسے سانحات کی روک تھام کے لئے اقدامات کرنے ہوں گے جب کہ اس بات کو بھی یقینی بنانا ہوگا کہ اس طرح کے دہشت گردی کے واقعات دوبارہ نہ ہوں۔
image

یوم شہدائے اے پی ایس کے حوالے سے اپنے ایک پیغام میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ معصوم شہدائ کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ شہدائے آرمی پبلک اسکول کو یاد کرتے ہوئے آرمی چیف کا مزید کہنا تھا کہ معصوم شہید بچوں اور ان کے خاندانوں کی قربانیاں ناقابل فراموش اور وطن سے ان کی محبت کی عکاس ہیں۔ آرمی چیف نے شہدائے آرمی پبلک سکول کو بھرپور خراج عقیدت پیش کیا۔
image

پاکستان مسلم لیگ ن  کے ایم این اے حمزہ شہباز شریف نے کہا ہے کہ کارکن ابھی سے الیکشن مہم کا آغاز کردیں جمہوریت کی پٹڑی سے اتری ہوئی چند ایک سیاسی شخصیات کے راہ راست پر آنے کی امید ہے، قوم تمام جماعتوں کا کردار بخوبی دیکھ بھی رہی ہے اور سمجھ بھی رہی ہے ان خیالا ت ا ظہا ر انہو ں نے سابق ایم پی اے امیر شہرخواجہ محمد اسلام سے  ہونے والی ملاقات کے دوران  کیا انہوں نے علاقے میں درپیش مسائل کے علاوہ سیاسی صورتحال پر گفتگو کی، متعلقہ حلقوں میں ترقیاتی کام،  ، واسا سمیت شہری سہولیات کے معیاری نیٹ ورک، انفرادی اور عوامی مسائل،پارٹی کی کارکردگی پر ہمہ جہتی تبادلہ خیال  کیا۔
image

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے جہانگیرترین کو بطور پارٹی سیکرٹری جنرل کام جاری رکھنے کی ہدایت کردی۔ پاکستان تحریک انصا ف کے سربراہ عمران خان کراچی کا دورہ مکمل کرکے اسلام آباد پہنچنے کے بعد جہانگیر ترین کی رہائش گاہ گئے جہاں عمران خان نے ان سے ملاقات کی۔ اس موقع پر انہوں نے جہانگیر ترین سے گزشتہ روز سپریم کورٹ کے فیصلے پر تبادلہ خیال کیا۔ اس موقع پر عمران خان نے ان کی دلجوئی کرتے ہوئے ہدایت کی وہ بطور پارٹی جنرل سیکریٹری اپنی ذمہ داریاں نبھاتے رہیں۔واضح رہے کہ گزشتہ روزسپریم کورٹ نے جھوٹ بولنے پر آئین کے آرٹیکل 62 کے تحت جہانگیر ترین کو تا حیات نااہل قرار دیا تھا۔
image

سپریم کورٹ کے چیف جسٹس  ثاقب نثار نے کہاہے کہ آئین اور جمہوریت کے تحفظ کی ہم نے قسم کھا رکھی ہے، جمہوریت سے تو آئین ہے اور آئین ہے تو ریاست ہے، قسم کھا سکتا ہوں کہ عدلیہ پر کوئی دبائو نہیں ہے، کسی کا دبائو چلتا تو حدیبیہ کیس کا فیصلہ اس طرح نہ آتا، فیصلے پر تبصرے کرنے والوں کو حقیقت کا علم نہیں ہوتا، ہم نے جتنے بھی فیصلے کئے آئین اور قانون کے مطابق ہیں، آپ کے خلاف بھی فیصلہ آ جائے تو عدلیہ کو گولیاں نہ دیں، کوئی پیدا نہیں ہوا جو ہم پر دبائو ڈالے یا فیصلوں کےلئے پلاننگ کرے، یقین دلاتا ہوں کہ ہم آئین کا تحفظ کریں گے، ہمارے نظام میں تاخیر سب سے بڑی خرابی ہے، سیاسی کچرے سے سپریم کورٹ کی جان چھوٹے تو باقی مقدمے بھی دیکھیں گی۔  چیف جسٹس ثاقب نثار نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وکیل سائلین سے بہت زیادہ فیس وصول کرتے ہیں، میں اپنی بڑائی بیان نہیں کرتا، میں صبح آٹھ بجے سے رات آٹھ بجے تک دفتر میں رہتا ہوں، نیند کےلئے 3سے 4گھنٹے وقت رہتا ہے، کیس نہیں بنتا، وکیل درج کرنے کا کہتا ہے، انصاف کی فراہمی کےلئے وکلا پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے، ہم شاید وہ معیاری انصاف نہیں دے پاتے جن کا حق ہے، میں عہد کرتا ہوں کہ ایک سال کا اپنا ٹیسٹ دیں اپنی محنت، کردار میں، اس ٹیسٹ کے بعد آئندہ نسلوں اور قوم کو فائدہ ہو گا، آپ کو پھر عادت پڑ جائے گی اور کرپشن ختم ہو جائے گی، ایک جج کےلئے سروائیو کرنا مشکل ہو گیا ہے، جج کی ڈیوٹی ہے قوم کی محبت کا قرض ادا کرے، جج کا دیکھیں کتنا استحصال ہورہا ہے، ججز کو چیمبرز میں جا کر گالیاں دینا کہاں کا شیوہ ہے، یہ کہاں کے پڑھے لکھے لوگوں کا کردار ہے، ہم اپنے بزرگوں کے سامنے بات نہیں کرتے تھے، عزت دونوں طرف ہونی چاہیے، میں عدلیہ اور وکلا کا بڑا بھائی ہونے کے ناطے کہہ رہا ہوں ،دونوں کو عزت دنا ہو گی، میں تمام غلطیوں کو مانتا ہوں اور آپ سے طلب گار ہوں کہ میرا ساتھ دیں، مجھے سینئر ججز اور وکلا سے اس معاملے کو حل کرنے کےلئے تعاون چاہیے، میں اعتراف کرتا ہوں کہ کیس میں دیر ہونا ایک بڑا مسئلہ ہے، کہنے اور کرنے میں بڑا فرق ہوتا ہے، ایک سائل جو حق پہ ہے  اس کےلئے پیشی پر جانا موت کا دن  ہوتاہے اور وہ مایوس واپس آجاتا ہے کسی بھی  وجہ سے کبھی  دھرنے اور کبھی کرکٹ میچ جیتنے کی وجہ سے ہڑتال کر دی جاتی ہے،کیا یہ آپ کی اور میری ذمہ داری ہے؟ہم دونوں کو مل کر غریب کو انصاف پہنچانا ہے، اپنی فیس کا آج سے ہی ڈسکائونٹ کر دیں، ہمارا یہ ادارہ یہ آپ کا بزرگ ہے، گائوں کے لوگ جانتے ہیں بزرگوں کو، یہ آدمی چاچا رحمت کی عزت کرتا ہے اور ان سے فیصلہ کراتا ہے، جس کے خلاف فیصلہ آئے وہ بابے کو گالیاں نہیں نکالتا کیونکہ بابے کی عزت سب سے زیادہ ہے، عدلیہ کی عزت پر شک نہ کریں، آپ کے خلاف فیصلہ ہوا تو یہ نہ کہیں یہ کسی منصوبے کا حصہ بن گیا ہے، یہ پلان کہاں سے آ گئے، عدلیہ میں، اس عزت سے بڑی اور کوئی عزت نہیں میرے لئے، ہم یہ انعام چھوڑنے کےلئے تیار نہیں ہیں، 18ویں ترمیم کیس  میں میں نے پارلیمنٹ کی برتری مانی ہے،ریاست کے سارے کام جمہوریت کے ساتھ جڑے ہیں،  میں اپنے بچے کو شرمندگی کے ساتھ نہیں چھوڑوں گا، ہمارے ادارے کو مضبوط کرنے میں ہمارا ساتھ دیں اور مبصرین فیصلہ پڑھے بغیر اپنی رائے دیتے رہتے ہیں، جن کا ہمیں بھی پتہ نہیں ہوتا۔کل کے فیصلے میں تکنیکی غلطی تھی جس کو ہم نے ٹھیک کیا، آپ کو عدلیہ پر فخر ہونا چاہیے، ہم جج آزاد ہیں، اگر آزادانہ ہوتا تو حدیبیہ کا فیصلہ ایسا نہ آتا، آپ لوگ رات کو بیٹھ کرٹی وی پر تبصرے کرتے ہیں، عدلیہ میں کوئی تفریق نہیں ہے، سب ججز ایک ہیں اور مل کر کام کرتے ہیں، اس عدلیہ پر کوئی دبائو نہیں ہے، فیصلے اپنے ضمیر اور قانون کے مطابق دیتے ہیں، میری زندگی بطور وکیل اور جج گزری، فیصلوں میں تاخیر نااہل ججز کی وجہ سے بھی ہوئی ہے، ریاست کا ہر ادارہ جمہوریت اور قانون کی حکمرانی کے باعث ہے، قانون کے مطابق فیصلہ کرنا ججز کی ذمہ داری ہے، ہمارے ججز کےلئے اچھا ٹریننگ پروگرام ہونا چاہیے، جوڈیشل اکیڈمی کو ایکٹیویٹ کرنا چاہیے تا کہ ججز سے غلطیاں کم سے کم ہوں، مجھے احساس ہے کہ اعلیٰ عدلیہ میں تعیناتیاں مشکوک ہیں، جب سے نیا جوڈیشل کمیشن میری سربراہی میں کام کر رہا ہے ہم بار سے ججز کے بارے میں پہلے رائے لیتے ہیں اورپھر میں ججز سے بعد میں رائے لیتا ہوں، جہاں تک قابلیت کا تعلق ہے تو جج کا باکردار ہونا سب سے زیادہ ضروری ہے، دوسرا قانون کا علم اور تیسری قابلیت ہے۔میں نے ہر چیف جسٹس کو کہا ہے کہ اپنے ساتھیوں کی رائے کے بعد اعلیٰ عدلیہ میں تعیناتیاں کریں، مجھے پتہ بھی ہے کہ میری مخالفت کرنے والے کون ہیں، اس لئے میں کہتا ہوں کہ بار کے بابوں سے مشاورت کریں اور بابے ایسے ہیں کہ انہوں نے اپنے کسی بندے کو جج نہیں لگوانا، ایسی  ہی مشاورت ہمیں منظور ہے، اس لئے ہم نے نظر ثانی کی کیونکہ شاید کچھ بھرتیاں میرٹ کے علاوہ ہو گئی ہوں، میں ان کے ہر کام کو مانیٹر کرتا ہوں اور ان کے فیصلوں کو ہم لوگ باریکی سے دیکھتے ہیں، ججز کو قابل اور باکردار ہونا چاہیے یہ ضروری ہے، میں وعدہ کرتا ہوں کہ ہم اس کےلئے ہر حد تک جائیں گے، ہمیں قوم کا حق ادا کرنا ہے، ہمارے بہت سارے فیصلوں میں تضاد بھی ہے، یہ بار اور ہماری ذمہ داری ہے کہ ان کو ریویو کریں، بار کمیٹی تشکیل کرے اور مجھے بتا دے ہم اس پر کام کریں گے اور تضاد کو ختم کرنے کی پوری کوشش کریں گے، ہم اگر کہیں غلط ہیں تو ان کی اصلاح ہمارا فرض ہے۔
image

   صدر مملکت ممنون حسین نے سانحہ اے پی ایس کے شہدا کی مغفرت اور بلند درجات کی دعا کرتے ہوئے کہا کہ معصوم طلبہ اور اساتذہ  کی قربانی نے دہشتگردی  کے خاتمے کے لئے قوم کو بیدار اور متحد کر دیا ہے ۔ سانحہ اے پی ایس کے شہدائ کی برسی کے موقع پر صدر ممنون حسین  نے اپنے ایک پیغام میں کہا کہ قوم سانحہ اے پی ایس کے شہدائ اور ان کے لواحقین کی قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھے گی کیونکہ ان معصوم طلبہ اور اساتذہ کی قربانیوں کی وجہ سے  آج ہم سب متحد ہوئے ہیں انہوں نے کہا کہ اب ہمیں عہد کرنا چاہئے کہ ملک میں انتہا پسندی کا راستہ ہمیشہ کے لئے بند کر دیا جائے گا کیونکہ سانحہ اے پی ایس کا دن ایک قومی المیہ ہونے کے ساتھ تجدید عہد کا دن بھی ہے ۔چیئرمین  پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا کہ  اے پی ایس کے طلبہ اور اساتذہ نے 16دسمبر کو قیمتی جانوں کا نذرانہ دیا تھا، عزم کریںاے پی ایس جیسا سانحہ دوبارہ نہ ہو۔  سماجی رابطوں کی ویب سائیٹ  پر عمران خان نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ  16دسمبر سانحہ اے پی ایس کے شہدا کو یاد کرنے کا دن ہے، اے پی ایس کے طلبہ اور اساتذہ نے اس دن قیمتی جانوں کا نذرانہ دیا تھا۔ علاوہ ازیں ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ  دہشتگردی کو ہرصورت شکست دی جائے گی، یہ ہمارا عزم  ہے، ہم آرمی پبلک سکول پشاور کے شہدا  کے ساتھ کھڑے ہیں۔  ڈاکٹر فیصل نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر اپنے ٹویٹ میں کہا کہ ہم آرمی پبلک سکول  پشاور کے شہدا  کے ساتھ کھڑے ہیں، ہم اب بھی ان شہدا کے لیے غمزدہ ہیں، دہشتگردی کو ہرصورت  شکست دے جائے گی،  ہمارا عزم ہے۔ علاوہ ازیں  وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے پشاور کے آرمی پبلک اسکول کے شہدا کی تیسری برسی پر اپنے پیغام میں کہا کہ سانحہ اے پی ایس میں معصوم بچوں کی شہادت پر پوری قوم آج بھی سوگوار ہے۔ شہباز شریف کا کہنا تھا کہ قوم شہدائے  اے پی ایس کی عظیم قربانی کو کبھی نہیں بھلا پائے گی، جن کے بہنے والے خون سے قوم کو امن نصیب ہوا ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب کا کہنا تھا کہ اے پی ایس کے بچو ں نے اپنے لہو سے تاریخ لکھی ہے اور شہید بچوں کے خون کا قرض دہشت گردوں کا صفایا کرکے اتارنا ہے۔ آرمی پبلک سکول پشاور کے بچوں نے بہادری اور جرات کی نئی تاریخ رقم کی، شہید ہونے والے بچے اور اساتذہ پوری قوم کے ہیرو ہیں اور رہیں گے۔ انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ دہشت گردی کی لعنت کو جڑ سے اکھاڑنے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔مریم اورنگزیب نے سانحہ اے پی ایس کی برسی کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ آج کے دن شہداکے خاندانوں کے عزم و ًحوصلے قابل فخر ہین کیونکہ آج ہی کے دن آرمی پبلک سکول پشاور کے ہمارے کم سن بچے دہشتگردوں نے شہید کئے اور انہی شہدا کی قربانی سے پوری قوم دہشتگردی کے خلاف ایک زبان ہو کر صف آرا ہوئے انہوں نے کہا کہ دہشتگردی جیسا موذی مرض اسلام پاکستان اور عوام کے خلاف دشمنوں کی سازش ہے لیکن مسلح افواج ، پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں نے بے مثال قربانیاں پیش کر کے ملک میں امن بحال کیا اور دہشتگردی کے خاتمے میں بہادر افسروں اور جوانوں کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی ۔ انہوں نے کہا کہ سانحہ اے پی ایس کے دلسوز واقعہ نے قوم کو دہشتگردی کے ناسور کے خلاف متحد کیا ہم شہید ہونے والے ان معصوموں کی قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھیں گے اور آخری دہشتگرد کے خاتمے تک آرام سے نہیں بیٹھیں گے ۔
image

 سانحہ آرمی پبلک سکول پشاور کو تین برس بیت چکے ہیں،  اس المناک سانحہ کی یاد میں  ملک بھر میں سیاسی و سماجی تنظیموں ،سول سوسائٹی،این جی اوزاور تعلیمی اداروں کے زیر اہتمام مختلف تقریبات کا اہتمام کیا گیاجن میں شہدا پشاور کیلئے قرآن خوانی ، فاتحہ خوانی اور دعائیہ تقریبات کا اہتمام ہوا۔ مختلف شہروں میں ان کی یاد میں شمعیں روشن کی گئیں جبکہ مختلف سیمینارزاور تقریبات میں شہدا کو خراج عقید ت پیش کیا گیااور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں  مصروف پاک فوج اور شہدا کے لواحقین سے یکجہتی کا اظہار کیا گیا۔ گا۔16دسمبر2014 کو آرمی پبلک سکول پشاور میں دہشت گرد گھس گئے جنہوں نے132معصوم طالب علموں سٹاف سمیت148افراد کوشہید کر دیا جبکہ دہشت گردوںکے گروپ اور ان کے سہولت کاراپنے منطقی انجام کو پہنچ چکے ہیںسات دہشت گرد موقع پر ہلاک ہوئے جبکہ آٹھ کوپھانسی کی سزا دی گئی۔
image

  وزیراعظم  شاہد خاقان عباسی  نے کہاہے کہ سا نحہ اے پی ایس نے پاکستانی قوم میں دہشت گردی کے خلاف تاریخ ساز وحدت کو جنم دیا ،نیشنل ایکشن پلان کے تحت ہماری بہادر افواج اور سیکورٹی اداروں نے دہشت گردوں کو شکستِ فاش دی ، آج پاکستان میں دہشت گردوں کی کمر ٹوٹ چکی ہے ، معصوموں کا خون رنگ لایا ہے اور آج پاکستانی قوم اقوامِ عالم میں وہ واحد قوم نے جس نے دہشت گردی کے خلاف جنگ جیتی ہے ،سانحہ اے پی ایس کے نتیجے میں ہم سے بچھڑ جانے والوں کی یاد ایک کسک بن کر ہمارے دلوں میں ہمیشہ موجود رہے گی، شہدا  کے خون سے لکھے جانے والے اِس باب کو منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا  ، آئیںعہد کریں کہ ہم سب مل کر پاکستان کو ایک ایسا جمہوری معاشرہ بنائیں گے جہاں مذہب ، فرقہ واریت ، لسانیت ، رنگ ونسل یا کسی بھی عنوان سے تشدد اور انتہا پسندی کو برداشت نہیں کیا جائے گا ۔سانحہ اے پی ایس کی یاد کے موقع پراپنے پیغام میں   وزیراعظم  شاہد خاقان عباسی  نے کہاکہ 16دسمبر2014 کا دن ملکی تاریخ میں اس سیاہ یوم کے طور پر یاد رکھا جائے گا جب بربریت اور سفاکیت کے علمبرداوں کی جانب سے آرمی پبلک سکول پشاور میں معصوم بچوں کو نشانہ بنایا گیا ۔ حصولِ تعلیم کے لیے جانے والے معصوم جب واپس لوٹے تو ان میں سے بہت ساروں نے شہادت کی قبا اوڑھ رکھی تھی اور ان کی ایک بڑی تعداد زخموں سے چور اور ذہنوں میں بزدل دشمن کی سفاکیت کے نقوش لیے ہوئے تھے ۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستانی قوم نے جان ومال کی جو قربانیاں پیش کی ہیں وہ شاید ہی کسی دوسری قوم نے دی ہوں ۔یہ دن ان معصوموں کو خراجِ عقیدت پیش کرنے اور ان کے غم زدہ والدین کے ساتھ اظہارِ ہمدردی کا دن ہے ۔ قوم ان معصوموں کی لازوال قربانی کو ہمیشہ یاد رکھے گی ۔  یہ دن دہشت گردی کے خلاف قومی عزم کے اعادے کا دن بھی ہے ۔ یہ دن ہمیں متوجہ کرتا رہے گا کہ ہم اپنی صفوں پر نگاہ رکھیں اور خبر دار رہیں کہ کوئی پاکستان میں انتہا پسندی کے بیج نہ بو سکے ۔ انتہا پسندی ہی وہ درخت ہے جس پر دہشت گردی کا زہریلا پھل لگتا ہے ۔
image

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ پاکستان مسلم لیگ ن  کی حکومت اپنی مدت پوری کرے گی اور کارکردگی کی بنیاد پر عوامی تائید سے 2018 کے عام انتخابات میں ایک بار پھر حکومت بنائے گی، کسی سازش سے خوفزدہ نہیں، عوام کی طاقت سے اقتدار میں آئے ہیں اور 2018 میں عوامی حمایت و تائید سے انشا اللہ دوبارہ حکومت قائم کریں گے، پاکستان مسلم لیگ  ن  کی حکومت کے اقدامات کی وجہ سے الحمد اللہ پاکستان بجلی میں خود کفیل ہو چکا ہے، اس وقت ہماری بجلی کی صلاحیت طلب سے زیادہ ہے۔ آزاد کشمیر میں 147میگاواٹ پترنڈ ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ ملک میں بجلی طلب سے زیادہ موجود ہے اور مختلف منصوبوں اور زیر تکمیل منصوبوں کی تکمیل کے بعد پاکستان 2030 تک بجلی کی پیداوار میں خود کفیل رہے گا، مسلم لیگ  ن  کے ساڑھے چار برسوں کا موازنہ 2002 سے لے کر 2013ئ تک بننے والی حکومتوں کے کام سے کیا جائے۔ وزیراعظم نے منصوبہ کی تکمیل پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ پاکستان اور کوریا کی دوستی کا ایک اہم منصوبہ ہے جس سے آزاد کشمیر میں بجلی کی ضروریات پوری ہوں گی، منصوبہ کو مقررہ وقت میں مکمل کرنا ہمارے لئے خوشی کا باعث ہے۔ اس موقع پر آزاد کشمیر کے صدر سردار مسعود خاں، وزیراعظم راجہ فاروق حیدر، وفاقی وزیر امور کشمیر و گلگت بلتستان برجیس طاہر، چیف سیکرٹری آزاد کشمیر، آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی وزرائ سمیت پترنڈ ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کے اعلیٰ حکام بھی موجود تھے۔
image

عوامی سروے

سوال: فاٹا اصلاحات بل حکومت کو منظورکرلینا چاہیئے؟