27 مئی 2018
تازہ ترین
سائنس اینڈ ٹیکنالوجی
انتخابات پر اثر انداز ہونے کے لئے سماجی رابطے کی ویب سائٹ کے استعمال کے پیش نظر ٹویٹر نے اپنی پالیسی تبدیل کرلی۔ امریکا میں ہونے والے صدارتی انتخاب میں فیس بک کا ڈیٹا استعمال ہونے کے انکشاف کے بعد سے فیس بک کے علاوہ دیگر سماجی رابطے کی ویب سائٹ نے بھی اپنی پالیسیوں میں تبدیلی لانے کا فیصلہ کیا ۔ مائیکرو بلاکنگ ویب سائٹ ٹویٹر نے کنٹرول سے باہر ہونے والی سیاسی کمپیئن کو ایک مخصوص دائرہ کار میں رکھنے کے لئے نئی پالیسی کا اعلان کر دیا ۔ ٹویٹر نے الیکشن کے دوران سیاسی مہم کی موثر نگرانی اور کسی قسم کی منفی سرگرمی کو روکنے کے لئے  سیاسی مہمات کی پالیسی وضع کردی ۔ جس کے تحت پولیٹیکل ایڈورٹائزر بنائے جائیں گے جو کہ سیاسی کمپیئن چلانے والوں کی شناخت اور مقاصد کی جانچ پڑتال کریں گے ، جبکہ سیاسی مہم کے لئے پہلے سے طے شدہ اصول و ضوابط پر عمل کرنا ضروری ہوگا۔ ٹویٹر کی اس نئی پالیسی کا مقصد کسی بھی ملک میں ہونے والے انتخابات میں کسی دوسرے ملک کی جانب سے اثر انداز ہونے کے امکانات کو ختم کرنا ہے۔ جیسا کہ امریکا کے صدارتی انتخاب میں مبینہ طور پر روس سے مداخلت کی گئی جس کے لئے سماجی رابطے کی ویب سائٹ کا سہارا لیا گیا۔ یہی وجہ ہے کہ اب ٹویٹر صرف مقامی افراد کو الیکشن مہم چلانے کی اجازت دے گا۔

 امریکی سائنسدانوں نے ایک عجیب و غریب منصوبے پر کام شروع کر دیا ۔ جس میں مائع قسم کے روبوٹس کو  چھوٹے چھوٹے گردے انسانی خلیوں  سے اگانے کی تربیت دی جارہی ہے اور اس مشن کو شروع کرنے والے سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ مائع قسم کے یہ عجیب و غریب روبوٹس چھوٹے چھوٹے اعضا کو 21دنوں میں اگا سکیں گے اور ساتھ ہی وہ تجزیاتی رپورٹ بھی تیار کرسکیں گے۔ سائنسدانوں کے مطابق یہ کام ایسا پیچیدہ اور نازک ہے کہ ا س میں روبوٹس اور بالخصوص مائع روبوٹس انسان سے زیادہ کارگر اور موثر ثابت ہوسکتے ہیں۔ یہ تجربہ کامیاب رہا اور سلسلہ جاری رہا تو  بہت ساری بیماریوں کیخلاف جاری جنگ میں انسان کا پلڑا زیادہ بھاری ہو جائیگا اور وہ ان بیماریوں سے بہتر طور پر نمٹ سکے گا۔ امریکی سائنسدانوں کی  ٹیم نے مائع روبوٹس کی کارکردگی کا مظاہرہ بھی یہاں ایک سیمینار میں کیا۔ تحقیقی رپورٹ کے نگراں اور مصنف بنیامین فریڈ مین ، یونیورسٹی کے سکول آف میڈیسن سے تعلق رکھتے ہیں اور اس کامیاب تجربے سے بیحد پرامید ہیں۔
image

سفید چھڑی دنیا بھر میں نابینا افراد کے لیے ایک اہم مددگار آلہ تصور کی جاتی ہے۔ اب ترکی کے نوجوان ماہرین نے روایتی چھڑی میں ٹیکنالوجی شامل کرکے اسے سمارٹ چھڑی میں تبدیل کردیا ہے اور اس ضمن میں کرائوڈ فنڈنگ کے لیے ایک ویب سائٹ بھی بنائی گئی ہے جسے وی واک منصوبے کا نام دیا گیا ہے۔ ترکی ینگ گرو اکیڈمی کی جانب سے یہ چھڑی بنائی گئی ہے جسے جدید ٹیکنالوجی کا شاہکار کہا جاسکتا ہے۔ اس میں سب سے اہم بات اس کا الیکٹرانک ہینڈل ہے جسے کسی بھی عام سفید چھڑی سے جوڑ کر اسے سمارٹ بنایا جاسکتا ہے۔ اس کے بعد چھڑی میں موجود الٹراسائونڈ سینسر آن ہوجاتا ہے جو سر کی سطح تک کی رکاوٹوں، ناہموار زمین، پانی اور کیچڑ وغیرہ کو قدم رکھنے سے پہلے بھانپ لیتا ہے اور ایک آواز کے ذریعے خبردار کرتا ہے۔ بہت شور کی جگہ پر اس کا ہینڈل سمارٹ فون کی طرح لرزش پیدا کرتا ہے جسے ہاتھوں پر محسوس کیا جاسکتا ہے۔ ہینڈل میں آگے کی جانب ایک روشن ایل ای ڈی لگائی گئی ہے جسے اندھیرے میں بینائی والے خواتین و حضرات دیکھ کر چوکنا ہوسکتے ہیں۔ اس کے ٹچ پیڈ کی بدولت کسی سمارٹ فون اور ٹیبلٹ کے ذریعے بھی اس چھڑی کو کنٹرول کیا جاسکتا ہے۔ اس کا مقصد یہ ہے کہ اس میں موجود سپیکر گوگل میپ اور دیگر ایپس کے ذریعے آواز سے رہنمائی بھی حاصل کرسکتے ہیں۔ وی واک سمارٹ چھڑی کا سارا سافٹ ویئر اوپن سورس ہے جس میں مزید تبدیلی اور بہتری کی جاسکتی ہے۔ اسے بنانے والی ٹیم نے انٹرنیٹ پر کرائوڈ فنڈنگ کی درخواست کی ہے اور وی واک کے ایک سیٹ کی قیمت پاکستانی 35 ہزار روپے تک ہوسکتی ہے جبکہ یہ اس سال دسمبر تک عام دستیاب ہوگی۔
image

موٹو زیڈ 3 پلے سمارٹ فون کی تفصیلات سامنے آگئی ہیں۔ فون میں ممکنہ طور پر 6 انچ ایمولڈ ڈسپلے ، گوریلا گلاس پروٹیکشن اور سنیپ ڈریگن 636 پروسیسر دیا جائے گا۔ فون کو 4 جی بی ریم کے ساتھ 32 جی بی اور 64 جی بی سٹوریج کے آپشنز میں پیش کیا جائے گا۔ سٹوریج کو ایس ڈی کار ڈکی مدد سے بڑھانے کی سہولت موجود ہو گی۔ فون کے کیمرہ سیٹ اپ میں 12 میگا پگسل کا بیک کیمرہ اور 8 میگا پگسل کا فرنٹ کیمرہ دیئے جانے کا امکان ہے۔ فون کی بیٹری 3000 ملی ایمپیئر آورز کی ہوگی اور اس میں ٹربو پاور سپورٹ بھی دی جائے گی۔ 
image

سام سنگ کمپنی کی جانب سے سائوتھ کوریا میں سام سنگ گیلکسی وائڈ 3 سمارٹ فون لانچ کر دیا گیا۔ یہ فون کمپنی کے گیلکسی وائڈ 2 سمارٹ فون کا نیا ماڈل ہے جسے پچھلے سال پیش کیا گیا تھا۔ سمارٹ فون میں 5.5 انچ ایچ ڈی ڈسپلے ، اینڈرائیڈ اوریو آپریٹنگ سسٹم ، اوکٹا کور پروسیسر ، 2 جی بی ریم اور 32 جی بی سٹوریج دیا گیا ۔ سٹوریج کو ایس ڈی کارڈ کی مدد سے 400 جی بی تک بڑھایا جاسکتا ہے۔ فون کے کیمرہ سیٹ اپ میں 13میگا پگسل کا بیک کیمرہ اور 13 میگا پگسل کا فرنٹ کیمرہ دیا گیا ۔ سمارٹ فون کی بیٹری 3300 ملی ایمپیئر آورز کی ہے۔ فون کو سلور اور کالے رنگ میں پیش کیا گیا۔
image

بارشوں میں نالوں اور سیوریج کا پانی دریائوں اور صاف پانی کے ذخائر میں شامل ہوجاتا ہے،  جس سے ای کولائی جیسے خطرناک بیکٹیریا بھی اس پانی کا حصہ بن جاتے ہیں۔ اس کیفیت کو کم خرچ فولادی ٹکڑوں سے دور کیا جاسکتا ہے۔ سائوتھ ڈکوٹا سٹیٹ یونیورسٹی میں گریجویٹ طالب علم پینگ ڈائی نے خراد کے ایک کارخانے سے کاربن سٹیل کے ٹکڑے لئے اور انہیں ای کولائی سے آلودہ پانی میں رکھ کر وہ پانی فولادی چورے سے گزارا۔ اس تجربے میں انہوں نے مختلف سائز کے فولادی ٹکڑے استعمال کئے اور پانی میں ای کولائی کی مقدار، پی ایچ قدر اور دیگر اشیا نوٹ کرتے ہوئے 5 سے 20 منٹ تک لوہے کو آلودہ پانی میں رکھا۔ انہوں نے نوٹ کیا کہ 0.5 سے 2 ملی میٹر چوڑے فولادی ذرات کو جب سب سے زیادہ وقت یعنی 20 منٹ تک پانی میں رکھا گیا تو اس سے پی ایچ کم ہوئی اور ہر سطح پر بیکٹیریا کی 99 فیصد مقدار ختم ہوگئی۔ جس پانی میں پی ایچ زیادہ تھی وہاں 90 فیصد بیکٹیریا ختم ہوگئے۔ اس کی وجہ ہے کہ ای کولائی پر منفی چارج ہوتا ہے جبکہ لوہے کے ٹکڑوں پر مثبت چارج ہوتا ہے۔ اس طرح برق سکونی یا الیکٹرو سٹیٹک اثر کے تحت یہ جراثیم فولادی چورے سے چپکتے ہیں اور اس کے بعد فولادی آئن ای کولائی کے خلیات کو تباہ کر ڈالتے ہیں۔ تجربہ گاہ میں کامیابی کے بعد اب اس تجربے کو حقیقی دنیا یا باقاعدہ سیوریج نظام پر آزمایا جائے گا۔ اگر یہ تجربہ درست ثابت ہوا تو اس سے آبی ذخائر کو مہلک بیکٹیریا سے صاف کرنے کا ایک عمدہ اور کم خرچ طریقہ ہمارے سامنے ہوگا۔ واضح رہے کہ پانی سے بیکٹیریا ختم کرنے کا ایسا ہی ایک تحقیقی کام 1980 کے عشرے میں پاکستان کونسل فار سائنٹفک اینڈ انڈسٹریل ریسرچ میں ڈاکٹر مرزا ارشد علی بیگ اور ان کے ساتھیوں نے کیا تھا لیکن اس میں چاندی سے استفادہ کیا گیا تھا جبکہ اس کا مقصد بظاہر صاف نظر آنے والے پانی کو ہر قسم کے جرثوموں سے پاک کرنا تھا۔ اسی تحقیق کے نتیجے میں پانی صاف کرنے والی ایک پروڈکٹ مصفی کے نام سے آج بھی بازار میں دستیاب ہے۔
image

چین آئندہ ماہ پاکستان کے لئے دو مشاہداتی سیٹلائٹس خلا میں بھیجے گا۔ چینی اخبار کے مطابق لانگ مارچ 2 سی راکٹ کی تیاری کا کام مکمل کرلیا گیا ، جس کے ذریعے جون میں دو سیٹلائٹس خلا میں بھیجے جائیں گے۔ یہ سیٹلائیٹس پاکستان کے لئے زمین پر مشاہداتی امور سرانجام دیں گے، ان میں سے ایک سیٹلائٹ سمندروں اور لہروں کا جائزہ لے گا جبکہ دوسرا خشکی اور زیر زمین معدنی وسائل کا پتا لگانے میں معاون ثابت ہوگا۔ سیٹلائیٹس چینی خلائی اکیڈمی اور پاکستان کی خلائی ایجنسی سپارکو نے جنوبی افریقہ کی خلائی کمپنی کے تعاون سے تیار کئے ہیں۔
image

فیس بک نے اپنی ویب سائٹ پر سیاسی اشتہار پوسٹ کرنے کے لئے  سخت شرائط نافذ کر دیں۔ ٹیکنالوجی ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق فیس بک نے امریکا کے فیس بک اور انسٹاگرام صارفین کے لئے کوئی بھی سیاسی اشتہار پوسٹ کرنے کے لئے سخت شرائط عائد کردی ہیں۔ فیس بک کا کہنا ہے کہ اس کا مقصد تمام سیاسی اشتہارات کو شفاف بنانا اور سوشل میڈیا پر ایسے کسی بھی مواد کو روکنا ہے جس سے انتخابات میں کوئی مشکل پیش آئے۔ حالیہ ڈیٹا سکینڈل کے فیس بک پر صارفین کے اعتماد میں خاصی کمی ہوئی ہے اور اس اعتماد کی بحالی کے لئے فیس بک مسلسل نئے اقدامات اٹھا رہی ہے۔  انہی اقدامات کے تحت فیس بک نے سیاسی اشتہارات پر نگرانی پہلے سے سخت کرنے کا فیصلہ کیا ۔ نئی پالیسی کے تحت فیس بک صارفین فراہم کردہ dedicated archive کے آپشن میں جاکر اشتہار دینے والے کا نام، عمر، مقام، بجٹ اور دیگر بنیادی معلومات حاصل کر سکتے ہیں۔ فیس بک گلوبل پالیٹکس اور گورنمنٹ آئوٹ ریچ ڈائریکٹر کیٹی ہارباتھ نے کہا کہ ہمارا اہم مقصد صارفین کی مدد کرنا ہے تاکہ وہ یہ جان سکیں کہ کون اشتہار دے رہا ہے اور کون اس پر رقم خرچ کر رہا ہے۔ فی الحال نئی سیاسی اشتہارات پالیسی کو صرف امریکا میں نافذ کیا گیا لیکن آئندہ ہفتے اس کا دائرہ دیگر ملکوں تک بڑھایا جائے گا۔ 
image

یوں تو کپڑے دھونا ایک ایسا مشکل کام ہے جسے کرنے میں اکثر خواتین کوفت میں مبتلا ہوجاتی ہیں،  جس کے بعد کوئی دوسرا کام کرنے کی ہمت نہیں رہتی اور ورزش تو بالکل بھی نہیں،  لیکن جناب فلپائنی شخص نے کپڑے دھونے کا نہ صرف آسان طریقہ ڈھونڈ نکالا ہے بلکہ ساتھ ہی ورزش کا انداز بھی بتا دیا ہے۔ فلپائن کے شہر ڈاوائو سے تعلق رکھنے والے 43 سالہ شخص نے عام واشنگ مشین کا انجن ہٹایا اور مشین کے بیلٹ کو سائیکل کے پیڈل سے یوں جوڑا کہ جب بھی پیڈل گھماتا مشین بھی ساتھ گھومنے لگتی اور یوں نہ صرف ایکسرسائز ہوجاتی بلکہ کپڑے بھی دھل جاتے ۔ یہ دلچسپ ایجاد خوب مقبول ہو رہی ہے اور لوگ اس کے طریقہ کار کو بیحد پسند کر رہے ہیں۔
image

بڑے بڑے کارخانوں، ہوائی اڈوں اور شاپنگ مالز میں عملہ ایک سے دوسری جگہ بھاگتا دوڑتا رہتا ہے ، جس کیلئے سیگ وے نامی ذاتی سواری برسوں سے استعمال کی جارہی ہے۔ اب بی ایم ڈبلیو کمپنی نے اسی طرز کی ایک سواری بنائی ہے جو پہلے کے مقابلے میں قدرے بہتر اور سادہ ہے۔ اس سواری کو پرسنل موور یعنی ذاتی نقل وحرکت والی سواری کا نام دیا گیا ۔ اس کے نیچے پانچ پہیے ہیں اور یہ ایک آدمی کو 25 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ایک جگہ سے دوسری جگہ پہنچا سکتی ہے۔ بعض کارخانوں اور شاپنگ مالز میں کارکنوں کو روزانہ 5 سے 10 کلومیٹر تک ایک جگہ سے دوسری جگہ جانا پڑتا ہے جس کے لئے یہ سواری تیار کی گئی ۔ اس کا پلیٹ فارم قدرے بڑا رکھا گیا ، جس پر وزن بھی رکھا جاسکتا ہے۔ بی ایم ڈبلیو موور کی اونچائی 110 سینٹی میٹر اور اس کا مرکزی پہیہ اسے آگے دھکیلتا ہے،  جبکہ آگے کے دو چھوٹے پہیے 360 درجے پر گھوم سکتے ہیں۔ اس طرح یہ سواری اپنے سوار کو ہر سمت میں حرکت کرنے کی سہولت دیتی ہے۔ اس کا ہینڈل موٹرسائیکل جیسا ہے اور پورا نظام بجلی سے چلتا ہے۔ اس میں ایل ای ڈی لائٹ اور خبردار کرنے کیئے گھنٹی بھی لگائی گئی ۔ گاڑی کی رفتار میں کمی بیشی کی جاسکتی ہے اور اسے بی ایم ڈبلیو کے کارخانوں میں پہلے ہی سے استعمال کیا جارہا ہے۔
image

ایچ ٹی سی یو 12 پلس سمارٹ فون کو باقاعدہ متعارف کرا دیا گیا ۔ سمارٹ فون میں 6 انچ ڈسپلے ، اینڈرائیڈ اوریو آپریٹنگ سسٹم اور اوکٹا کور سنیپ ڈریگن 845 پروسیسر دیا گیا ۔ فون کو 6 جی بی ریم کے ساتھ 64 جی بی اور 128 جی بی سٹوریج کے آپشنز میں پیش کیا گیا۔ سٹوریج کو ایس ڈی کارڈ کی مدد سے بڑھانے کی سہولت بھی موجود ہے۔ سمارٹ فون کے کیمرہ سیٹ اپ میں پشت پر 12 میگا پگسل اور 16 میگا پگسل کے دو سنسر دیئے گئے ہیں۔ فون کے فرنٹ پر 8 میگا پگسل کے دو کیمروں کو جگہ دی گئی ۔ کنیکٹیویٹی کے لئے سمارٹ فون میں فورجی ، وائی فائی ، بلیوٹوتھ ، جی پی ایس اور این ایف سی سپورٹ دی گئی ۔ فنگرپرنٹ سکینر کو فون کی پشت پر شامل کیا گیا ۔ سمارٹ فون کج بیٹری 3500 ملی ایمپیئر آورز کی ہے۔ فون کو سرخ اور کالے رنگ میں متعارف کرایا گیا ۔ 64 جی بی سٹوریج کے ساتھ فون کی قیمت 799 ڈالر جبکہ 128 جی بی  سٹوریج کے ساتھ فون کی قیمت 849 ڈالر ہے۔ فون کو جون کے وسط میں فروخت کے لئے پیش کیا جائے گا۔
image

پاکستان میں تعلیمی مسائل کو حل کرنے اور شعور کو اجاگر کرنے کے لئے تعلیم دو موبائل ایپ متعارف کرا دی گئی ۔ سٹیزن رپورٹنگ کے لئے تعلیم دو موبائل ایپ   الف اعلان   نے لانچ کی ہے جو گزشتہ 5 برس سے پاکستان میں تعلیمی مسائل حل کرنے کے لئے کام کر رہی ہے۔ الف اعلان کے ڈیجیٹل میڈیا ہیڈ عمران غزالی نے کہا ہے کہ اس ایپ کا مقصد پاکستانی شہریوں کو بااختیار بنانا ہے تاکہ وہ مضبوط اور تعلیم یافتہ پاکستان کے لئے اپنی آواز بلند کر سکیں۔ تعلیم دو ایپ کے ذریعے شہری تعلیمی معیار کو بہتر بنانے یا کسی بھی تعلیمی مسئلے کے حوالے سے رپورٹ کر سکتے ہیں یا اس ایپ پر موجود دیگر تعلیمی خبریں اور تعلیمی معلومات حاصل کر سکتے ہیں۔ اس ایپ کو آئی او ایس اور اینڈرائڈ دونوں صارفین کے لئے فراہم کیا گیا۔ ساتھ ہی صارفین ایپ کو اردو یا انگریزی زبانوں میں استعمال کر سکتے ہیں۔ الف اعلان کے  ڈائریکٹر مشرف زیدی نے ایپ لانچ تقریب میںکہا کہ پاکستان کا ہر بچہ سکول میں معیاری تعلیم حاصل کرنے کا حق رکھتا ہے۔ پاکستان تعلیمی اعداد و شمار کی حالیہ رپورٹ کے مطابق 22.8 ملین بچے ایسے ہیں جو اب تک سکول جانے سے محروم ہیں ، جبکہ نیشنل اسیسمنٹ ٹیسٹ 2016 کی رپورٹ کے مطابق ریاضی اور سائنس کے مضامین میں طلبا نے 50 فیصد سے بھی کم سکور کیا۔
image

گرلنگ اور باربی کیو کا دھواں اور اس سے خارج ہونے والے مضر ذرات جلد کے راستے سرطان سمیت کئی اہم امراض کی وجہ بن سکتے ہیں۔ انوائرونمینٹل سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نامی جریدے میں شائع ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جلد کے راستے سے گزر کر باربی کیو کے ذرات سانس کے مقابلے میں زیادہ نقصان دہ ثابت ہوسکتے ہیں اور بسا اوقات یہ کسی کپڑے سے بھی نہیں رکتے ۔  یہ تحقیق امریکن کیمیکل سوسائٹی کے اجلاس میں بھی پیش کی گئی  اور اسے چین کی جینان یونیورسٹی کے ماہرین نے انجام دیا ۔ یہ رپورٹ امریکی تناظر میں کی گئی ، جہاں ہر گھر میں باربی کیو کیلئے گرل اور سموکر موجود ہوتا ہے اور 70 فیصد امریکی گوشت باربی کیو کرکے کھاتے ہیں جبکہ ان میں 50 فیصد سے زائد گھرانے مہینے میں چار مرتبہ باربی کیو سے کھانا پکاتے ہیں۔ اس عمل میں مضر صحت ذرات پولی سائیکلک ایئرومیٹک ہائیڈرو کاربنز (پی اے ایچ) پیدا ہوتے ہیں۔ اس دوران باربی کیو کے پاس کھڑے ہونے والے افراد بھی پی اے ایچ کے شکار بنتے ہیں کیونکہ اس عمل میں ان کی بڑی مقدار پیدا ہوتی ہے جو سرطان کی وجہ بن سکتے ہیں۔ پریشان کن امر یہ ہے کہ سانس اور جلد، دونوں کے ذریعے ہی یہ انسانی جلد میں نفوذ کر سکتے ہیں۔ سروے کیلئے ماہرین نے رضا کاروں کو کئی گروہوں میں تقسیم کیا اور ان کو باربی کیو عمل اور دھویں سے مختلف فاصلوں پر رکھا۔ اس کے بعد ان کے پیشاب کے نمونے لئے گئے تو باربی کیو کھانے والوں میں پی اے ایچ کی زائد مقدار نوٹ کی گئی۔ اس کے بعد دوسرے مرحلے پر وہ لوگ تھے جن کی جلد کے ذریعے ذرات گئے ان میں  پی اے ایچ کی دوسری بڑی مقدار نوٹ کی گئی۔ جن افراد نے باربی کیو کے دوران مکمل لباس کے ذریعے خود کو ڈھانپ رکھا تھا ایک موقعے پر ان افراد کا لباس بھی پی اے ایچ سے بھر گیا اور اس کے بعد وہ ذرات جلد تک پہنچنے لگے۔ ماہرین کا خیال ہے کہ سیخ بوٹی اور چکن تکہ بنانے کے عمل میں استعمال ہونے والا تیل جلد سے چپک جاتا ہے اور اس کے باریک قطروں میں موجود پی اے ایچ جلد کے اندر نفوذ کرنے لگتے ہیں۔
image

سام سنگ کمپنی نے گلیکسی ایس لائٹ لگژری سمارٹ فون باقاعدہ متعارف کرا دیا ۔ سمارٹ فون میں 5.8 انچ انفینٹی ڈسپلے ، سنیپ ڈریگن 660 پروسیسر ، 4 جی بی ریم اور 64 جی بی سٹوریج دیا گیا ۔ فون کے کیمرہ سیٹ اپ میں 16 میگا پگسل کا بیک کیمرہ اور 8 میگا پگسل کا سیلفی کیمرہ دیا گیا ۔ فون کی بیٹری 3000 ملی ایمپئر آورز کی ہے اور اس میں وائرلیس چارجنگ سپورٹ بھی دی گئی ۔ سمارٹ فون واٹر پروف بھی ہے۔ فون کی پشت پر فنگر پرنٹ سکینر کو شامل کیا گیا ۔ فون کو سرخ اور کالے رنگ میں پیش کیا گیا  اور اسکی قیمت 625 ڈالر ہے۔
image

نوکیا کمپنی کی جانب سے نوکیا 8 سیروکو اور نوکیا 2 سمارٹ فون کے لئے اپ ڈیٹ جاری کر دی گئیں۔ اپ ڈیٹ میں اینڈرائیڈ سیکیورٹی فکسز کو بھی شامل کیا گیا ۔ نوکیا 8 سیروکو کے لئے جاری کردہ اپ ڈیٹ کا حجم 82.5 ایم بی جبکہ نوکیا 2 کے لئے اپ ڈیٹ کا حجم 88 ایم بی ہے۔ اپ ڈیٹ کو تمام صارفین کے لئے جاری کر دیا گیا ۔
image

 برطانوی وزیر ماحولیات مائیکل گوو نے  کہا ہے کہ طرح طرح کے صابن ، ایئر فریشنر ، دیواروں اور گاڑیوں وغیر ہ کو رنگنے والے پینٹ ، گلو ، ٹوائلٹ کلینرز، قالین اور پرفیوم فضائی آلودگی میں بڑا کردارادا کررہے ہیں کیونکہ ان میں طرح طرح کے کیمیکلز استعمال کئے جاتے ہیں اور ماہرین کے بیان کے مطابق جب ان مختلف اشیا پر سورج کی کرنیں پڑتی ہیں تو انتہائی منفی ردعمل سامنے آتا ہے جو انسانی صحت اور ماحولیاتی درستگی دونو ںکیلئے بیحد خراب ہے۔
image

چاول کے دانے کے برابر چِپ انسان کی زندگی کو کئی انداز میں سہل بنا سکتی ہے۔سوئیڈن میں لوگ شناختی کارڈ کے متبادل کے طور پر  اپنے جسم میں مائیکرو چپ لگوا رہے ہیں۔ اس چپ کی بدولت لوگ  چابیاں ،کریڈٹ کارڈز اور ٹرین کی ٹکٹس رکھنے کی جھنجھٹ سے بچ سکیں گے ۔ سوئیڈن میں جاسوسی یا ہیک ہوجانے کے خوف کے باوجود 3000افراد نے اپنے جسم میں یہ چپ لگوائی ہے۔ چپ لگنے کا عمل ناک یا کان چِھدوانے جیسا ہی ہے۔
image

دنیا کے نمایاں انسٹی ٹیوٹس کے 33 سائنس دانوں نے دعویٰ کیا ہے کہ آکٹوپس خلا سے ایک دُم دار ستارے کے ذریعے زمین تک پہنچا۔ سائنسی جرنل پروگریس اِن بائیو فزکس اینڈ مالیکیولر بائیولوجی میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ سمندری مخلوق آکٹوپس دراصل ایک دُم دار ستارے کے ذریعے زمین پر پہنچا۔ اس انوکھی تھیوری میں کہا گیا ہے کہ ہزاروں لاکھوں سال پہلے جب وائرس، مائیکروبز اور چھوٹی چھوٹی زندگیاں تخلیق ہو رہی تھیں، اُس وقت آکٹوپس کے انڈے ان ہی تخلیقات کے ساتھ ایلین ذرائع سے زمین تک پہنچے۔ اگرچہ مارچ میں شائع ہونے والی یہ تھیوری متنازع ہے اور سائنسدانوں کی ایک بڑی تعداد اس سے اتفاق نہیں کرتی، لیکن پھر بھی یہ سائنس پیپرز میں قابل بحث ہے۔ اس انوکھی تحقیق میں یہ تو بتا دیا گیا کہ آکٹوپس شاید خلا سے زمین پر آئے لیکن اس بات کی وضاحت نہیں کی گئی کہ ان جانداروں نے اپنی موجودہ شکل کیسے حاصل کی اور یہ باقی جانوروں سے حد درجہ مختلف کیسے ہیں۔
image

گوگل کمپنی نے مصنوعی ذہانت یعنی آرٹیفیشل انٹیلیجنس کا استعمال کرتے ہوئے گوگل نیوز ایپ کو اَپ ڈیٹ کر دیا ہے جس سے صارفین کو خبروں کے حصول میں مزید آسانی ہوگی۔ گوگل کمپنی نے گزشتہ ہفتے اپنی آئی او ڈیولپر کانفرنس میں اعلان کیا تھا کہ مصنوعی ذہانت کی مدد سے صارفین کو دنیا بھر کی تمام خبریں فوری طور پر اور باآسانی حاصل ہو سکیں گی کیونکہ آرٹیفیشل انٹیلیجنس صارف کی دلچسپی کو مدنظر رکھتے ہوئے کام کرے گی۔ گوگل نیوز ایپ کو اب آئی او ایس صارفین بھی استعمال کرسکتے ہیں کیونکہ آرٹیفیشل انٹیلیجنس کی مدد سے یہ ایپل کے ایپ سٹور میں بھی دستیاب ہے۔ اَپ ڈیٹڈ نیوز ایپ میں ہیڈ لائنز، فل کوریج، فیورٹس، نیوز سٹینڈ اور نیوز کاسٹ فیچرز بھی شامل ہیں۔ اب صارفین بذریعہ ہیڈلائنز اس حوالے سے جان سکیں گے کہ دنیا بھر میں کیا اہم ہو رہا ہے، جس میں کاروباری، ٹیکنالوجی اور دیگر خاص خبریں شامل ہوں گی۔ اس کے فُل کوریج فیچر سے صارف کسی بھی خبر کو ہر پہلو سے مکمل طور پر باآسانی جان سکتے ہیں، جس میں خبر کی تمام تفصیلات بیان ہوں گی، اس کے علاوہ اگر کسی اہم شخصیت نے کوئی ٹوئیٹ کی ہو تو وہ بھی خبر میں شامل ہوگی۔ مزید آسانی فراہم کرتے ہوئے اس میں فیورٹس کا فیچر بھی شامل کیا گیا ہے جس کی مدد سے صارف خبر کو محفوظ کر سکتا ہے تاکہ اگر کسی وجہ سے وہ اسے اُس وقت نہیں پڑھ سکا تو بعد میں فیورٹس میں جا کر اُس خبر کو پڑھ لے۔ دوسری جانب نیوز کاسٹ فیچر اُن تمام خبروں کی جھلکیاں دِکھاتا ہے، جس میں صارف کی دلچسپی ہوتی ہے۔
image

ویسے تو سمارٹ فونز کمپنیاں اپنی نئی ڈیوائسز کو ہر ممکن حد تک چھپانے کی کوشش کرتی ہیں، کم از کم متعارف کرانے تک، مگر ایچ ٹی سی نے اپنے نئے فون یو 12 پلس کو خود ہی قبل از وقت لیک کردیا۔ ایچ ٹی سی کی ویب سائٹ کے ٹیسٹ حصے میں اس کمپنی کے نئے فلیگ شپ فون کی تصاویر اور فیچرز سب کچھ لیک کردیا گیا۔ ویب سائٹ کے مطابق یہ فون 6 جی بی ریم اور 128 جی بی سٹوریج کے ساتھ ہوگا۔ اس کی قیمت 920 ڈالرز ہوگی اور اس طرح یہ سام سنگ کے گلیکسی ایس 9، آئی فون ایکس اور ہواوے کے پی 20 پرو کو ٹکر دینے کی کوشش کرے گا۔ تاہم مارکیٹ کے ٹرینڈ کے برعکس اس فون میں آئی فون ایکس جیسا نوچ نہیں بلکہ او ایل ای ڈی سکرین بھی نہیں دی گئی۔ ویب سائٹ میں دیئے گئے فیچرز کے مطابق یہ فون 6 انچ کے ڈبلیو کیو ایچ ڈی پلس سپر ایل سی ڈی سکس ڈسپلے کے ساتھ ہوگا۔ اس میں بوم سائونڈ سپیکر، واٹر اور ڈسٹ ریزیزٹنٹ، مائیکرو ایس ڈی کارڈ سلاٹ  شامل ہیں ۔ جن سے سٹوریج 2 ٹی بی تک بڑھائی جاسکے گی، 3500 ایم اے ایچ بیٹری اور سنیپ ڈراگون 845 پراسیسر دیا جائے گا۔کمپنی کو غلطی کا احساس ہونے کے بعد تصاویر اور فیچرز کو ہٹا لیا گیا، تاہم جب تک یہ انٹرنیٹ پر پھیل چکے تھے۔
image

 ڈاکٹر پنجوانی سینٹر برائے مالیکیو لر میڈیسن اور ڈرگ ریسرچ جامعہ کراچی کے نوجوان سائنسدان ڈاکٹر عبدالحمید کو جاپان کی اینڈو کرائن سوسائٹی کے اجلاس میں غیر معمولی سائنسی کام پیش کرنے پر ایکسیلنٹ ایوارڈ دیا گیا ہے جو پاکستان کے لیے ایک قومی اعزاز کی بات ہے۔ ڈاکٹر عبدالحمید پی سی ایم ڈی جامعہ کراچی میں ڈاکٹر ایم حفیظ الرحمن کے تحقیقی گروپ سے منسلک ہیں، ان کی پی ایچ ڈی کی تحقیق بھی نئی انسولین سیکرٹری کینڈی ڈیٹ مالیکولز کی دریافت پر مبنی ہے، شیخ الجامعہ کراچی پروفیسرڈاکٹر محمد اجمل خان، آئی سی سی بی ایس جامعہ کراچی کے سرپرست اعلیٰ پروفیسر ڈاکٹر عطاالرحمن اوربین الاقوامی مرکز کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹرمحمد اقبال چوہدری نے ڈاکٹر عبدالحمید کو اْن کی کامیابی پرمبارک باد پیش کی ہے۔
image

ایک نئی تحقیق سے ظاہر ہوا ہے کہ جو لوگ رات کو دیر سے سوتے اور صبح دیر سے اٹھتے ہیں ان کے قبل از وقت مرنے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔ چار لاکھ 33 ہزار لوگوں پر کی جانے والی تحقیق سے پتہ چلا کہ صبح جلد اٹھنے والوں کی نسبت رات کو دیر تک جاگنے والوں میں مرنے کا امکان دس فیصد زیادہ ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ بھی معلوم ہوا کہ دیر سے اٹھنے والے کئی قسم کے دماغی اور جسمانی امراض میں زیادہ آسانی سے مبتلا ہو جاتے ہیں۔ سائنس دانوں نے تحقیق میں حصہ لینے والوں سے، جن کی عمریں 38 اور 73 سال کے درمیان تھیں، پوچھا کہ کیا وہ سخت سحر خیز جلد اٹھنے والے ہیں،معتدل سحر خیز ہیں، معتدل دیر خیز ہیں یا پھر سخت دیر خیز ہیں۔ یہ تحقیق کرو نوبیالوجی انٹرنیشنل نامی جریدے میں شائع ہوئی ہے۔ اس کے بعد سائنس دانوں نے ان شرکا کا ساڑھے چھ سال تک مشاہدہ کیا۔ عمر، جنس، قومیت، تمباکو نوشی کی عادت، وزن اور معاشی حالت جیسے عناصر کو مدِنظر رکھتے ہوئے سائنس دانوں نے معلوم کیا کہ سخت سحر خیزوں میں قبل از وقت موت کے امکانات سب سے کم تھے، اور وہ جتنی دیر سے جاگتے تھے، ان کے مرنے کا خطرہ بھی اسی تناسب سے بڑھ جاتا تھا۔ دوسری طرف رات کو تادیر جاگنے والوں میں نفسیاتی مسائل کا شکار ہونے کے امکانات بھی 90 فیصد زیادہ تھے، جب کہ ذیابیطس کا امکان 30 فیصد زیادہ تھا۔ اس کے علاوہ ان میں کئی اور قسم کے امراض کا خطرہ بھی زیادہ تھا۔ سائنس دانوں نے یہ تو نہیں معلوم کیا کہ صحت کے ان مسائل کی وجہ کیا ہے، لیکن وہ کہتے ہیں کہ زیادہ امکان اس بات کا ہے کہ یہ دنیا سحر خیزوں کی ہے اور دیر خیزوں کو اس میں اپنے آپ کو ڈھالنا پڑتا ہے جس کی وجہ سے یہ مسائل پیدا ہوتے ہیں۔ امریکہ کی نارتھ ویسٹرن یونیورسٹی میں نیورولوجی کے ایسوسی ایٹ پروفیسر کرسٹن نوسٹن کہتے ہیں کہ اس کی وجوہ میں نفسیاتی دبائو، جسم کے لحاظ سے غلط وقت پر کھانا کھانا، مناسب ورزش نہ کرنا، نیند پوری نہ کر پانا، رات اکیلے جاگتے رہنا، اور منشیات یا شراب کا استعمال شامل ہو سکتی ہیں۔  رات کے اندھیرے میں تادیر جاگتے رہنے سے متعدد قسم کے غیر صحت مندرانہ رویے جنم لیتے ہیں۔ تحقیق کے ایک اور منصف میلکم وون شینٹز ہیں جن کا تعلق یونیورسٹی آف سرے سے ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ دیر خیزوں کو جو مسائل پیش آتے ہیں وہ عوامی صحت کا مسئلہ ہیں جنہیں مزید نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ ہمیں چاہیے کہ دیر خیزوں کو کام دیر سے شروع کرنے اور بعد میں ختم کرنے دیں۔ تاہم پروفیسر نوسٹن کہتے ہیں کہ دیر خیز اب بھی کسی حد تک اپنی سونے کی عادات کو کنٹرول کر سکتے ہیں۔ سائنس دانوں کے مطابق جسم کی حیاتیاتی گھڑی کا 40 سے 70 فیصد حصہ جینیاتی ہوتا ہے، جب کہ باقی کا تعلق ماحول یا عمر سے ہوتا ہے۔ اس کا ایک حصے پر آپ کو اختیار ہے، ایک پر نہیں۔ نیند کے ماہرین حیاتیاتی گھڑی کو بدلنے کے لیے مندرجہ ذیل تجاویز پیش کرتے ہیں۔ اس بات کو یقینی بنائیں کہ آپ صبح کے وقت تیز روشنی میں رہیں لیکن رات کو نہیں۔ کوشش کریں کہ نیند کا وقت باقاعدہ ہو، اور جہاں تک ممکن ہو دیر سے نہ سوئیں۔ صحت مندانہ طرزِ زندگی اختیار کریں کو ذہن میں رکھیں کہ آپ کی نیند کا وقت کتنا اہم ہے جس حد تک ممکن ہو، کوشش کریں کہ رات جلد سوئیں اور صبح جلد اٹھیں۔
image

انڈیا میں حکام نے کہا ہے کہ حالیہ طوفان گردوباد کے اتنے مہلک ہونے کی وجہ طوفان کے آنے کا وقت تھا کیونکہ طوفان کے وقت لوگ اپنے گھروں میں سو رہے تھے۔ 125 ہلاکتوں میں سے زیادہ تر اموات عمارتوں اور دوسری تعمیرات کے گرنے سے ہوئی ہیں۔ لیکن محکمہ  موسمیات نے تباہ کن طوفان کے بارے میں یہ بات بھی کہی ہے کہ ہوا کا نیچے کی طرف شدید دبائو تھا جسے ڈائون برسٹ کہا جاتا ہے۔ ہوا افقی کے بجائے عمودی تھی اور اس لیے اس کے عمارتوں میں پر زیادہ تباہ کن اثرات مرتب ہوئے اور نتیجتاً زیادہ اموات ہوئیں۔ سرحد پار پاکستان میں مقامی میڈیا کے مطابق نواب شاہ شہر میں 50 ڈگری سینٹی گریڈ سے زیادہ درجہÂ حرارت ریکارڈ کیا گیا جو کہ اپریل کے مہینے میں ایک ریکارڈ ہے۔
image

 معروف موبائل فون نوکیا نے چین میں ریکارڈ بنا ڈالا ۔ کمپنی کا نیا اینڈرائیڈ اسمارٹ فون ایکس 6 جب چین میں فروخت کے لیے پیش کیا گیا تو اس کے تمام سیٹس 10 سیکنڈ میں فروخت ہوگئے۔اس بات کا اعلان نوکیا کی جانب سے چینی سوشل میڈیا نیٹ ورک ویبو پر ایک پوسٹ میں کیا گیا۔ رپورٹس کے مطابق فون اسنیپ ڈراگون 636 پراسیسر، 4 جی بی ریم ،32 سے 64 جی بی اسٹوریج، 16 اور 5 میگا پکسل ڈوئل رئیر کیمرہ سیٹ جبکہ 16 میگا پکسل فرنٹ کیمرے جیسے فیچرز سے لیس ہے۔نوکیا ایکس سکس 5.8 انچ کے بیزل لیس ڈسپلے کے ساتھ ہے جس میں پہلی بار اس کمپنی نے آئی فون ایکس جیسا نوچ دیا ہے۔ پوسٹ کے مطابق نوکیا ایکس 6 کے ہزاروں سیٹ 10 سیکنڈ میں فروخت ہوگئے۔تاہم یہ اعلان نہیں کیا گیا کہ کتنے سیٹس چین کے مختلف حصوں میں فروخت کے لیے پیش کیے گئے تھے اور مزید ڈیوائسز کب تک صارفین کو دستیاب ہوں گی، تاہم ایسا کبھی آئی فون یا سام سنگ کے فونز کے ساتھ بھی نہیں ہوا کہ 10 سیکنڈ میں سب سیٹس فروخت ہوگئے ہوں۔تاہم فون کی فروخت سے قبل پری آرڈر میں بھی لاکھوں سیٹس کی بکنگ ہوچکی تھی۔ 
image

سام سنگ کمپنی نے ایک اور افورڈایبل سمارٹ فون جے 4 متعارف کرادیا ہے۔سمارٹ فون میں 5.5 انچ سپر امولڈ ڈسپلے ، اینڈرائیڈ اوریو آپریٹنگ سسٹم ، کواڈ کور ایکسینوس 7570 پروسیسر ، 2 جی بی ریم اور 16 جی بی سٹوریج دیا گیا ہے۔ سٹوریج کو ایس ڈی کارڈ کی مدد سے 256 جی بی تک بڑھایا جا سکتا ہے۔ سمارٹ فون کے کیمرہ سیٹ اپ میں ایل ای ڈی فلیش اور ایچ ڈی ویڈیو ریکارڈنگ سپورٹ کے ساتھ 13 میگا پکسل کا بیک کیمرہ اور فرنٹ پر ایل ای ڈی فلیش کے ساتھ 5 میگا پکسل کا کیمرہ دیا گیا ہے۔فون کی بیٹری 3000 ملی ایمپئر آورز کی ہے اوراس کا ٹاک ٹائم 20 گھنٹے سے زائد ہے۔فون کی قیمت 13 ہزار ہندوستانی روپے ہے۔
image

عوامی سروے

سوال: کیا نواز شریف کے ممبئی حملوں سے متعلق بیان کے بعد ان کے خلاف سخت کارروائی ہونی چاہئے؟